کالعدم ٹی ٹی پی قبائلی افراد، خواتین اور اسکول کے بچوں کو نشانہ بنانے لگی

شمالی وزیرستان : ریاست نے کالعدم ٹی ٹی پی کے تمام مطالبات کو ماننے سے انکار کر دیا ، جس کے بعد دہشت گردوں نے قبائلی افراد، خواتین اور اسکول کے بچوں کو نشانہ بنانا شروع کردیا۔

تفصیلات کے مطابق کالعدم ٹی ٹی پی نے نئے ضم اضلاع کے قبائلی لوگوں کو نشانہ بنانا شروع کردیا ، کالعدم ٹی ٹی پی بالخصوص خواتین اوراسکول کے بچوں کو نشانہ بنارہی ہے۔

ریاست نے کالعدم ٹی ٹی پی کے تمام مطالبات کو ماننے سے انکار کر دیا ، جس کے بعد دہشت گرد مایوس ہوکر خواتین اور اسکول کے بچوں کو نشانہ بنا رہے ہیں۔

ریاست کے آئین پاکستان کے تحت دہشت گردوں سے نمٹنے کے ریاستی عزم نے دہشت گردوں کو مایوس اورخوفزدہ کیا ہے۔

ریاستی اقدامات کے نتیجے میں دہشت گردوں کی کارروائیوں کی صلاحیت بری طرح متاثرہوئی ہے اور اس وقت دہشت گردوں کے پاس منظم ہونے کی صلاحیت باقی بچی ہے نہ ہی کوئی حمایت حاصل ہے۔

دہشت گردوں کی نقل و حرکت کو بڑی حد تک محدود کر دیا گیا ہے اور مایوس ہوکر دہشت گرد اب اپنے آخری حربے آزما کرریاست کی توجہ چاہتے ہیں۔

ریاستی اقدامات کے نتیجےمیں دہشتگردوں کی کارروائیوں کی صلاحیت بری طرح متاثرہوئی ہے،اس وقت دہشتگردوں کےپاس منظم ہونےکی صلاحیت باقی بچی ہےنہ ہی کوئی حمایت حاصل ہے ، مایوس ہوکردہشتگرد اب اپنےآخری حربےآزما کرریاست کی توجہ چاہتے ہیں