خیبر پختونخوا حکومت ترقیاتی منصوبے شروع کر کے کارکردگی بڑھائے، ڈاکٹر عارف

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے خیبر پختونخوا حکومت کو کارکردگی بڑھانے سمیت پائیدار اور قابل عمل ترقیاتی منصوبے شروع کرنے کی ہدایت کردی۔

ان خیالات کا اظہار صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے صوبائی حکومت کے ترقیاتی منصوبوں اور امن و امان کی مجموعی صورتحال پر بریفنگ کے دوران کیا، عارف علوی کو بتایا گیا کہ صوبہ میں صحت کارڈز سے 15 لاکھ مریض تقریباً 27 ارب روپے کے علاج کی سہولیات حاصل کر چکے۔

بریفنگ کے دوران صدر کو بتایا گیا کہ گزشتہ چار سالوں کے دوران 1005 کلومیٹر پر محیط سڑکیں تعمیر کی گئیں جب کہ 1071 اسکول قائم کئے جا رہے ہیں یا ان کی تزئین و آرائش کی جا رہی ہے، اسی طرح 200 بی ایچ یوز، 50 آر ایچ سیز، اور 25 ڈی ایچ کیو کی تشکیل نو سے 24 گھنٹے سہولیات فراہمی پر کام جاری ہے۔

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے صوبائی حکومت کی طرف سے شروع کی گئی ترقیاتی سرگرمیوں کو سراہا اور حکومتی کارکردگی بڑھانے سمیت پائیدار اور قابل عمل ترقیاتی منصوبے شروع کرنے کی ہدایت کی اور کہا کہ بہتر منصوبہ بندی اور عمل درآمد سے خدمات کی فراہمی بہتر بنائی جا سکتی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ بہتر مالیاتی کنٹرول اور احتساب سے ترقیاتی منصوبوں کی کارکردگی اور افادیت بہتر بنائی جائے، بہتر مالیاتی انتظام سے قومی اور صوبائی خزانے پر مالی بوجھ کو کم کرنے میں مدد ملے گی۔

صدر مملکت نے عوام کی توقعات اور خدمات کی فراہمی کے درمیان فرق کو دور کرنے کی ضرورت پر زور دیا اور کہا کہ صحت، تعلیم اور دیگر شعبوں میں انفراسٹرکچر، بنیادی سہولیات کو عوام کی ضروریات کے مطابق لانے کی ضرورت ہے، بہتر منصوبہ بندی اور ترقیاتی منصوبوں پر عملدرآمد طلب اور رسد کا فرق پورا کرنے میں مدد دے سکتی ہے۔

صدر مملکت نے متعدی اور غیر متعدی امراض کی روک تھام پر توجہ دینے کی ضرورت پر بھی زور دیتے ہوئے کہا کہ ضروری احتیاطی تدابیر، صحت مند زندگی گزار کر بیماریوں کے مجموعی بوجھ کو کم کیا جا سکتا ہے۔

ڈاکٹر عارف علوی کا کہنا تھا کہ خیبر پختونخوا میں ضم شدہ اضلاع میں تنازعات کے متبادل حل کے طریقہ کار کو اپنایا جا سکتا ہے، تنازعات کے حل کے متبادل نظام سے ان علاقوں میں لوگوں کی شکایات کا فوری اور بروقت ازالہ ہو سکے گا اور اس سے خطے میں امن و امان کی مجموعی صورتحال کو بہتر بنانے، روایتی نظام انصاف پر بوجھ کم کرنے میں مدد ملے گی۔