28 غیرملکی کھلاڑی پی ایس ایل کے لیے پاکستان آنے کو تیار

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

پاکستان سپریم لیگ کا پانچواں ایڈیشن آئندہ برس فروری میں منعقد ہوگا اور اس کے لیے ٹیموں کے ڈرافٹس آئندہ ماہ منعقد ہوں گے۔

غیرملکی کھلاڑیوں کی رجسٹریشن کے لیے ونڈو تاحال کھلی ہے اور21 نومبر  کو رجسٹریشن مکمل ہونے کے بعد پی سی بی فہرست میں شامل تمام کھلاڑیوں کے نام جاری کر دے گا۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کا کہنا ہے کہ اب تک پلاٹینم کیٹیگری میں ڈیل اسٹین، معین علی، کالن منرو سمیت 28 کھلاڑیوں کی رجسٹریشن ہو چکی ہے۔

پی سی بی نے آئندہ سیزن کے لیے مختلف کیٹیگریز میں کھلاڑیوں کو ملنے والے معاوضوں کااعلان بھی کردیا ہے۔

پلاٹینم کیٹگری میں شامل ہر کھلاڑی کو 2 کروڑ 30 لاکھ سے  3 کروڑ 40 لاکھ روپے ملیں گے۔

ڈائمنڈ ڈائمنڈ کیٹگری والوں کو ایک کروڑ 15 لاکھ سے ایک کروڑ 60 لاکھ روپے( 73 ہزار تا103 ہزارامریکی ڈالر) دیے جائیں گے۔

گولڈ کیٹگری والوں کو 60 لاکھ سے 89 لاکھ روپے( 44ہزار تا58 ہزارامریکی ڈالر) ملیں گے۔

سلور کیٹیگری والوں کو 24 لاکھ سے 54 لاکھ روپے اداکیے جائیں گے۔

ایمرجنگ پلیئرز کو 10 لاکھ سے 15 لاکھ روپے دیے جائیں گے، جب کہ اختیاری یا سپلمنٹری راؤنڈ کا بجٹ کیپ 19 ایک کروڑ 90 لاکھ روپے مختص کیا گیا ہے، ہر ٹیم کو اس راؤنڈ میں 2 کھلاڑیوں کے انتخاب کا اختیار ہوگا۔

دوسری جانب جنوبی افریقہ کے فاسٹ بولر ڈیل سٹین ان اٹھائیس غیر ملکی کھلاڑیوں میں شامل ہیں جنھوں نے آئندہ سال ہونے والی پاکستان سپر لیگ میں کھیلنے کے لیے رضامندی ظاہر کر دی ہے۔ ڈیل سٹین کے علاوہ جن 28 کھلاڑیوں کے نام اب تک پلاٹینم کیٹگری میں شامل ہوئے ہیں ان میں معین علی، جیسن روئے اور عادل رشید بھی شامل ہیں۔

ویسٹ انڈیز کے کیرون پولارڈ بھی پلاٹینم کیٹگری میں شامل ہیں تاہم وہ ویسٹ انڈیز کی نمائندگی کرنے کی وجہ سے پوری لیگ کے لیے دستیاب نہیں ہوں گے۔ افغانستان کے تین کرکٹرز راشد خان، محمد نبی اور مجیب الرحمن نے بھی پی ایس ایل میں شرکت پر رضا مندی ظاہر کی ہے۔

پاکستان سپر لیگ کے قواعد وضوابط کے مطابق ہر ٹیم میں کم ازکم سولہ اور زیادہ سے زیادہ اٹھارہ کھلاڑی شامل ہونے ضروری ہیں۔ ہر ٹیم میں پانچ یا چھ غیر ملکی کرکٹرز کی شمولیت بھی لازمی ہے۔

واضح رہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے اس بار پی ایس ایل کے تمام میچز پاکستان میں کرانے کا اعلان کر رکھا ہے۔