سوات میں بدامنی کے خلاف ملک کے سلامتی کے اداروں کے ساتھ کھڑے ہیں

چیئرمین ڈیڈیک سوات و ممبر صوبائی اسمبلی فضل حکیم خان یوسفزئی نے کہاہے کہ سوات پاکستان کے علاقے سوات میں امن و امان صور تحال خراب کرنے کی اجازت کسی کو نہیں دی جائے گی.

انہوں نے کہا کہ امن و امان کی صورتحال پر نظر ہے اور اس سلسلے میں ادارے متحرک ہیں، امن و امان کی صورتحال کو خراب کرنے کی اجازت کسی کو نہیں دی جاسکتی.

انہوں نے مزید کہا کہ کہ عوام اور ادارے ملک کر ملک دشمن عناصر کے مذموم مقاصد خاک میں ملا دیں گے، اداروں کی استعداد اور عوامی سپورٹ میں بڑی تبدیلی آئی ہے.

ملک کے سلامتی کے اداروں کے ساتھ ہیں اور اس ضمن میں ہر قسم کے اقدامات کئے جائیں گے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے مینگورہ میں مختلف وفود سے ملاقات میں کیا۔

چئیر مین ڈیڈیک سوات کا کہنا تھا کہ بڑی قربانیاں دے کر سوات کا امن بحال کیا گیا ہے اور یہاں ترقی کا ایک نیا دور شروع ہوا اور ترقی کی راہ میں رکاوٹ ڈالنے والے عناصر کا راستہ پہلے بھی روکا تھااب بھی روکیں گے۔

انہوں نے فود سے گفتگو میں کہاکہ قدرتی آفات اور بدامنی کی وجہ سے ماضی میں ضلع پسماندگی کا شکار ہوا، پچھلے کئی سالوں کی بھرپور محنت سے ضلع میں ترقی کا دور شروع ہوا جس کو وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان نے نئی جہت دی .

انہوں نے کہا کہ سوات کو پھر سے قومی اور بین الاقوامی سیاحت کے ساتھ ساتھ انویسٹمنٹ کا مرکز بنایا اور سیاحتی ڈھانچے کو حالیہ سیلاب نے نقصان پہنچایاہے مگر حکومت بحالی اقدامات کے لئے بھرپور کوششیں کر رہی ہے