کوئلے کی کان میں مزدور جاں بحق، وزیرمعدنیات کا نوٹس

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

وزیر معدنیات خیبرپختونخوا ڈاکٹر امجد علی نے کالا خیل ضلع خیبر میں کوئلے کے کان میں حادثے کا نوٹس لے لیا۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز کالا خیل میں کوئلے کے کان میں گیس جمع ہونے پر تین مزدورپھنس گئے تھے جن میں سے دو افراد کو ریسکیوکرلیا گیا ہے جبکہ ایک مزدور کے لیے ریسکیو آپریشن جاری ہے۔

محکمہ معدنیات کے مطابق بند کان پرماہرین کی منظوری کے بغیر کام شروع کیا گیا تھا۔ محکمہ معدنیات نے بتایا کہ کان میں آگ لگنے کے باعث ریسکیو کا کام تاخیر کا شکار ہوا ہے اور پوری رات ریسکیو کا عمل جاری رہا۔

محکمہ کے مطابق وزیر معدنیات ڈاکٹر امجد علی نے واقعہ کی انکوائری کے احکامات جاری کردیئے اور متعلقہ حکام کو کوئلے کے کان کا دورہ کرنے کی ہدایت بھی کی۔

وزیر معدنیات نے کہا ہے کہ مالکان مائنز سیفٹی ایکٹ کی پاسداری کریں اور مزدوروں کی زندگی خطرے میں ڈالنے والے مالکان کے خلاف سخت ایکشن لیا جائیگا۔

ذرائع کے مطابق حادثے کا شکار ہونے والے مزدوروں کا تعلق ضلع شانگلہ سے بتایا جاتا ہے۔ واضح رہے کہ کوئلے کی کانوں میں کام کرنے والے اکثرمزدوروں کا تعلق ضلع شانگلہ سے ہوتا ہے۔

مقامی لوگوں کے مطابق شانگلہ کا اکثریتی حصہ پہاڑوں پر مشتمل ہے اور صرف 32 فیصد قابل کاشت زمین کی وجہ سے کاشتکاری پر بھی گزر بسر ناممکن ہے یہی وجہ ہے کہ یہاں کے نوجوان جب جوانی کی دہلیز پر قدم رکھتے ہیں تو کوئلے کی کانوں میں مزدوری ان کا انتظار کررہی ہوتی ہے جہاں سے اکثر اوقات ان کا جنازہ واپس آتا ہے۔