پاکستان میں سیلاب سے اتنی تباہی پہلے کبھی نہیں‌ دیکھی: انتونیو گوتریس

اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوتریس نے کہا ہے کہ زمین کا درجہ حرارت بڑھ رہا ہے، پاکستان میں سیلاب سے اتنی تباہی پہلے کبھی نہیں‌ دیکھی۔

تفصیلات کے مطابق یو این سیکریٹری جنرل نے پاکستان کے سیلاب زدہ علاقوں کے تفصیلی دورے کے بعد ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ موسمیاتی تبدیلی سے جتنی تباہی پاکستان میں ہوئی ہے، اس پیمانے پر انھوں نے تباہی نہیں دیکھی۔

انتونیو گوتریس نے لکھا زمین کا درجہ حرارت بڑھ رہا ہے، وہ ممالک نقصانات اٹھا رہے ہیں جو ارضی درجہ حرارت میں اضافے سے نہیں نمٹ سکتے۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ ایک عالمی بحران ہے اور پاکستان میں ہونے والی تباہی عالمی رد عمل چاہتی ہے۔.

ایک اور ٹویٹ میں انتونیو گوتریس نے لکھا کہ پاکستان میں متاثرہ لوگوں کے انسانی مصائب سے ہٹ کر میں نے بہادری کی اعلیٰ مثالوں کو بھی دیکھا، میں سول سوسائٹی، انسانی بنیادوں پر کام کرنے والی تنظیموں اور اقوام متحدہ کی ٹیموں کا شکریہ ادا کرتا ہوں جنھوں نے ہنگامی طور پر وہاں پہنچ کر ان تھک محنت کے ساتھ کام کیا۔

یو این سیکریٹری جنرل نے کہا کہ ہم پاکستانی عوام کے ساتھ یک جہتی کے ساتھ کھڑے ہیں۔

دسرے جانب وزیر اعظم شہباز شریف نے اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل کا خصوصی شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ انھیں انتونیو گوتریس کے قائدانہ کردار نے متاثر کیا۔

وزیر اعظم پاکستان شہباز شریف نے ایک ٹوئٹ میں لکھا کہ ہم سیکریٹری جنرل اقوام متحدہ کے سیلاب متاثرین کی بے مثال معاونت پر مشکور ہیں، ان کا دورہ سیلاب سے جنم لینے والے انسانی المیے سے متعلق آگاہی کے لیے اہم ہے۔

انھوں نے کہا سیکریٹری جنرل یو این کے ہمدردانہ اور قائدانہ کردار نے مجھے بے حد متاثر کیا، پاکستان کو اس چیلنج سے نمٹنے کے لیے عالمی برادری کی مدد کی ضرورت ہے۔

شہباز شریف نے لکھا کہ سیکریٹری جنرل یو این سیلاب سے بڑے پیمانے پر تباہی سے دلی طور پر رنجیدہ ہوئے، انتونیو گوتریس متاثرین سیلاب کی آواز بن کر ابھرے ہیں۔

انھوں ںے مزید لکھا کہ متاثرہ علاقوں اور کیمپوں کے دورے کے دوران انتونیو گوتریس تباہی دیکھ کر شدید حیران اور پریشان ہوئے، موسمیاتی تبدیلی کے خطرات کے بارے میں انتونیو گوتریس نے جو کہا اس پر دنیا کو توجہ دینی چاہیے۔

اقوام متحدہ : پاکستان میں مزید بارشوں سے حالات بدترین ہونے کا خدشہ ہے

اقوام متحدہ نے خبردار کیا ہے کہ پاکستان میں مزید بارش متوقع ہے ، جس سے حالات کے بدترین ہونے کا خدشہ ہے۔

تفصیلات کے مطابق اقوام متحدہ کے ادارہ برائے مہاجرین یو این ایچ سی آر کی جانب سے بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان میں آئندہ مہینوں میں مزید بارشیں ہونےکی توقع ہے، جس سے سیلاب متاثرین کی حالات مزید خراب ہوسکتی ہے۔

نیشنل ڈیزاسٹر ایجنسی نے کہا کہ مون سون کی ریکارڈ بارشوں اور شمال میں گلیشیر پگھلنے سے آنے والے سیلاب نے 33 ملین افراد کو متاثر کیا اور کم از کم 1,325 افراد ہلاک ہوئے ہیں جن میں 466 بچے بھی شامل ہیں۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا کہ تقریباً 636,940 بے گھر افراد کو خیمہ بستیوں میں رکھا گیا ہے، پانی مکانات، سڑکیں، ریل اور ٹیلی کمیونیکیشن سسٹم کو بہا لے گیا اور ساتھ کھڑی اور ذخیرہ شدہ فصلیں تباہ ہو گئی ہیں۔

اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوتیریس نو سے گیارہ ستمبر تک تین روزہ دورے پر پاکستان آئیں گے اور سیلاب سے ہونے والے نقصانات کا جائزہ لیں گے۔

دورے کے موقع پر انتونیو گوتیریس وزیراعظم شہباز شریف، وزیر خارجہ بلاول بھٹو اور پی ڈی ایم کی زیر قیادت اتحادی حکومت کے دیگر رہنمائوں سے بھی ملاقات کریں گے۔