پاک فوج کی جانب سے ملک بھر میں سیلاب زدگان کو بچانے کیلئے ریسکیو اینڈ ریلیف آپریشن جاری

پاک فوج کی جانب سے ملک بھر میں سیلاب زدگان کو بچانے کیلئے ریسکیو اینڈ ریلیف آپریشن جاری ہے، سندھ کے مختلف اضلاع قمبر شہداد کوٹ، جیکب آباد، لاڑکانہ، خیرپور، دادو، نوشہرو فیروز، ٹھٹھہ اور بدین میں پاک فوج کی دن رات امدادی سرگرمیاں جاری ہیں.

میڈیا رپورٹس کے مطابق لوچستان میں کوئٹہ، نصیر آباد، جعفرآباد، جھل مگسی، بولان، صحبت پور اور لیسبیلہ میں پاک فوج کے دستے امدادی سرگرمیوں میں مصروف ہیں ،

دسرے جانب خیبر پختو نخوا کے اضلاع دیر، سوات، چارسدہ، کوہستان، ٹانک، ڈی آئی خان اور پنجاب میں ڈی جی خان اور راجن پورمیں پاک فوج کے دستے امداد میں پیش پیش ہیں.

افواج پاکستان کی جانب سے سیلاب متاثرین میں راشن اورکھانا تقسیم کرنے کا سلسلہ بھی جاری ہے مختلف علاقوں میں پھنسے افراد کو ریسکیو کرنے کیساتھ فوری طبی سہولیات بھی فراہم کی جارہی ہیں.

ڈی جی آئی ایس پی آر کے مطابق حفاظتی مقامات پر افواج پاکستان متاثرین کو ہر سہولت فراہم کرتی رہے گی پاک فوج مشکل وقت میں وطن عزیز کے لوگوں کے ساتھ کھڑی ہے.

انہوں نے کہا کہ نیشنل فلڈ ریسپانس کوآرڈینیشن کمیٹی نے ملک بھر میں سیلاب سے ہونے والے جانی و مالی نقصانات، ریسکیو اور ریلیف آپریشنز سے متعلق تازہ ترین اعدادوشمار جار ی کر دیئے ہیں.آج ملک کے بیشتر حصوں میں موسم بنیادی طور پر گرم اور مرطوب رہے گا-

بالائی خیبرپختونخوا، آزاد جموں و کشمیر اور جی بی میں چند مقامات پر موسم جزوی طور پر ابر آلود رہنے کی توقع ہے۔ تا ہم آئندہ 24 گھنٹوں کے دوران بالائی خیبر پختونخوا، آزاد جموں و کشمیر، جی بی اور ملحقہ پہاڑیوں میں چند مقامات پر گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان ہے۔

مزید برآں 10 ستمبر کو ملک کے بیشتر حصوں میں موسم گرم اور مرطوب رہے گا، سیلاب متاثرہ علاقوں میں اب تک پر 1355 افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں اور12722 زخمی ہوئے.

میڈیا رپورٹس کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 14 اڑان بھری گئی اور 163 پھنسے ہوئے افراد کو نکالا گیا اور مزید یہ کہ اب تک 3879 پھنسے ہوئے افراد کو ان ہیلی کاپٹر پروازوں کے ذریعے نکلا جا چکا ہے.

رپورٹس کے مطابق اب تک 5538 ٹن اشیائے خوردونوش کے ساتھ 991 ٹن غذائی اشیاء اور 3322632 ادویات کی اشیاء جمع کی جا چکی ہیں، 5148 ٹن خوراک، 948 ٹن غذائی اشیاء اور 2916597 ادویات تقسیم کی جا چکی ہیں.

آرمی ایوی ایشن کی ہیلی کاپٹر پروازوں کے ذریعے گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 34 ٹن راشن متاثرہ علاقوں میں پہنچایا گیا .

اب تک سندھ، جنوبی پنجاب اور بلوچستان میں 147 ریلیف کیمپس اور سیلاب متاثرین کے لیے امدادی سامان جمع کرنے ملک بھر میں 284 ریلیف آئٹمز کلیکشن پوائنٹس قائم کیے گئے ہیں۔

میڈیکل ریلیف کے حوالے سے 250 سے زائد میڈیکل کیمپس قائم کیے گئے جن میں اب تک102,721مریضوں کا علاج کیا گیا اور انھیں 3 تا 5 یوم کی ادویات دیں گئیں ۔

پاک بحریہ اور پاک فضائیہ کی ریلیف اور ریسکیو کی کوششیں کامیابی سے جاری ہیں ، مسلح افواج نے ملک بھر میں فلڈ ریلیف کوآرڈینیشن سینٹرز اور سینٹرل کلیکشن پوائنٹس قائم کیے ہیں، مختلف اضلاع میں ہزاروں ٹن راشن، ہزاروں خیمے اور لاکھوں لیٹر منرل واٹر تقسیم کیے ہیں۔