سیلاب سے متاثرہ ٹانک میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی

سیلاب سے متاثرہ ٹانک میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی، وزیر مواصلات نے ضلعی انتظامیہ اور ریسکیو حکام کو ٹانک کے سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں ہنگامی بنیادوں امدادی کارروائیاں عمل میں لانے کی ہدایت کی ہے۔

مولانا مفتی اسعد محمود کا کہنا ہے کہ سیلاب سے متاثرہ ضلع ٹانک میں امدادی کاموں اور ریسکیو سرگرمیوں کے لئے تمام سرکاری مشینری کو بھرپور طور پر متحرک کیا جائے، اس مقصد کے لئے تمام وسائل ترجیحی بنیادوں پر بروئے کار لائے جائیں.

انہوں نے کہا کہ سیلاب سے متاثرہ آبادی کو محفوظ مقامات پر منتقل کرنے اور انہیں درکار سہولیات کی فراہمی کو ہر لحاظ سے یقینی بنایا جائے، تمام متعلقہ ڈویژنل کمشنرز اور ڈپٹی کمشنرز ریسکیو اور ریلیف سرگرمیوں کی خود نگرانی کریں۔

دسرے جانب ٹانک اور درازندہ میں شدید بارشوں کی وجہ سے سیلابی ریلے تیزی سے ڈیرہ اسماعیل خان کی طرف بڑھ رہے ہیں، جس سے تمام ڈرینوں کے آس پاس کے لوگوں کو الرٹ کر دیا گیا ہے، آج رات اور کل دن کو شدید خطرہ ہے۔

ملازئی اور گل امام سے آنے والا پانی یارک ڈرین سے گزریگا، گرہ بلوچ اور رنوال سے آنے والا پانی بڈھ سے ھو کر مندھراں کلاں ڈیرین سے گزریگا، گرہ بلوچ اور رنوال سے آنے والا آدھا پانی چشمہ شوگر مل والی ڈرین سے گزریگا۔

اس کے علاوہ کوٹ ظفر لونی اور کلاچی والا پانی نائیویلہ ڈرین سے گزریگا، درازندہ اور درابن سے آنے والا پانی تحصیل پاروا کی ڈرینوں سے گزریگا۔ جھوک منگل سے آنے والا پانی میرن اور رمک کی ڈرینوں سے گزرے گا۔

سیلاب کی صورٹ حل کو دیکھ کر ڈپٹی کمشنر ڈیرہ اسماعیل خان نصراللہ خان نے پاک آرمی کے افسران کے ہمراہ سیلاب زدہ علاقوں کا دورہ کیا اور امدادی آپریشن کا معائینہ کیا۔

اس کے علاوہ انیق انور اسسٹنٹ کمشنر پہاڑپور نے بھی ٹی ایم او پہاڑپور اور تحصیلدار پہاڑ پور کے ہمراہ سیلابی صورتحال کا جائزہ لینے کے لیے متاثرہ علاقوں کا دورہ کیا، لوگوں کے مسائل سنے اور متاثرین کے لیے کی جانیوالی امدادی کاروائیوں کی جانچ کی۔

ضلعی انتظامیہ ڈیرہ کی جانب سے ڈگری کالج پہاڑپور میں سیلاب متاثرین کیلئے ریلیف کیمپ بھی قائم کیا گیا ہے۔ مزکورہ ریلیف کیمپ میں سیلاب سے متاثرہ افراد کو رہائش اور دیگر ضروری سہولیات مہیا کی جائیں گی۔