حکومت نے عالمی منڈی میں کمی کے باوجود پیٹرولیم قیمتوں میں اضافہ کر دیا

حکومت نے پیٹرول کی قیمت میں 6 روپے 72 پیسے فی لیٹر مزید اضافہ کر دیا، جبکہ نئی قیمتوں کا اطلاق آج سے ہوگا۔ وزارت خزانہ کے اعلامیہ کے مطابق 6 روپے 72 پیسے فی لیٹر اضافے کے بعد پیٹرول کی نئی قیمت 233 روپے 91 پیسے فی لیٹر ہوگئی ہے۔

علاوہ ازیں ہائی اسپیڈ ڈیزل کی قیمت میں 51 پیسے فی لیٹر کمی کر دی گئی، جس کے بعد ہائی اسپیڈ ڈیژل آئل کی قیمت 244.95 روپے سے کم کرکے 244.44 روپے فی لیٹر ہوگئی۔

نوٹی فکیشن کے مطابق لائٹ ڈیزل 43 پیسے فی لیٹر مہنگا کر دیا گیا، جس کے بعد لائٹ ڈیزل آئل کی قیمت 191.32 روپے سے بڑھا کر 191.75 روپے فی لیٹر ہوگئی۔ نوٹی فکیشن کے مطابق مٹی کے تیل کی قیمت 201.07 روپے سے کم ہو کر 199.40 روپے فی لیٹر کر دی گئی ہے۔

واضح رہے کہ گذشتہ روز وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے کہا تھا کہ حکومت پیٹرولیم مصنوعات پر نقصان برداشت کرسکتی اور نہ ہی سبسڈی دے سکتی ہے۔

نجی ٹی وی پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے مفتاح اسماعیل نے کہا تھا کہ عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتیں کم ہونے کے بعد وزارت خزانہ کی جانب سے پیٹرولیم مصنوعات پر کوئی ٹیکس لگے گا اور نہ لیوی میں کوئی اضافہ کیا جائے گا.

انہوں نے مزید بتایا کہ پاکستان اس وقت نقصان برداشت نہیں کرسکتے اور نہ ہی سبسڈی دینے کے متحمل ہیں۔