قبائل اور پارلیمانی کمیٹی کے مذاکرات کامیاب ہونے پر دھرنا ختم

شمالی وزیرستان میں بدامنی اور ٹارگٹ کلنگ کے خلاف 4 ہفتوں سے جاری احتجاجی دھرنا تمام سیاسی جماعتوں پر مشتمل وزیر اعظم کے تشکیل کردہ جرگے کے مذاکرت کامیاب کے بعد ختم کر دیا گیا۔

جرگے نے پارلیمانی کمیٹی کو 15 دن کا وقت دے دیا، اس دوران اتمنزائی قوم کا احتجاجی کیمپ جاری رہے گا، پارلیمانی کمیٹی ممبران نے 6 گھنٹوں کی مسلسل کوششوں کے بعد قبائلی مشران کو منا لیا.

مذاکراتی ٹیم نے کہا کہ شمالی وزیرستان کے قبائل کے جتنے مسئلے و مشکلات ہیں وزیراعظم کے سامنے رکھ کر اس کا حل نکالا جائے گا۔

شمالی وزیرستان کے عمائدین و مشران نے کامیاب مذاکرات کے بعد کئی دن سے بند پاک افغان بنوں میرانشاہ شاہراہ اور تمام کاروباری مراکز کو 15 دنوں کیلئے کھولنے کا اعلان کردیا۔

جرگے کے سربراہ اکرم خان درانی نے میڈیا کے نمائندوں کو بتایا کہ جرگے کی پوری کوشش ہوگی کہ 15 دنوں کے اندر اندر قبائل کے تمام مسائل و مشکلات کا ازالہ کیا جائے۔

انہوں نے کہا شمالی وزیرستان میں ٹارگٹ کلنگ انتہائی افسوسناک ہیں، ہم ان کی بھرپور مذمت کرتے ہیں، ہر صورت اس کو ختم کرنے کیلئے ٹھوس اقدامات کئے جائیں گے۔