دیر میں دھماکے سے سیکیورٹی فورس کے دو اہلکار شہید

خیبر پختونخوا کے شہر دیر میں دھماکے سے سیکیورٹی فورسز کے دو اہل کار شہید ہوگئے۔ آئی ایس پی آر کے مطابق خیبر پختونخوا کے شہر دیر کے علاقے باروال میں گزشتہ روز دھماکا ہوا، جس کے سببب سیکیورٹی فورسز کے دو جوان شہید ہوگئے۔

شہداء میں 30 سالہ سپاہی ساجد علی اور 32 سالہ سپاہی عدنان ممتاز شامل ہیں۔ آئی ایس پی آر نے اپنے بیان میں بتایا ہے کہ دونوں شہدا کا تعلق آزاد کشمیر سے ہے، دہشت گردوں کے خاتمے کے لیے کلیئرنس آپریشن کیا گیا۔

دریں اثنا کوٹلی میں سپاہی ساجد علی کی نماز جنازہ ادا کر دی گئی۔ شہید ساجد علاقہ گوئی بٹالی سے تھا جو ایل او سی کا رہنے والا تھا۔ اس کی 8 ماہ قبل ہی شادی ہوئی تھی۔ شہید کی نماز جنازہ آج اتوار کو دن ایک بجے گوئی سہنی پنیالی کے مقام پر ادا کی گئی۔

بعدازاں انہیں سپرد خاک کردیا گیا۔ نماز جنازہ میں کمانڈنگ آفیسر جندروٹ سمیت بڑی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی اور شہید سپاہی کو پاک فوج کے دستے نے سلامی دی۔

دسرے جانب پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے مطابق نامعلوم شرپسند عناصر نے گزشتہ شب بلوچستان کے شہر ہرنائی میں کے قریب واقع سکیورٹی فورسز کے چیک پوسٹ پر حملہ کیا۔ دہشتگردوں نے چیک پوسٹ پر فائرنگ کی۔ جس پر سکیورٹی اہلکاروں نے جوابی کارروائی کی۔

آئی ایس پی آر کے مطابق دہشتگردوں نے رات کی تاریکی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے پہاڑوں میں پناہ لی۔ واقعہ کے بعد سکیورٹی فورسز کی جانب سے سرچ آپریشن شروع ہوا۔

آئی ایس پی آر کے مطابق اس دوران پاک فوج کے دو اہلکار نائیک عاطف اور سپاہی قیوم شہید ہوئے ہیں، جبکہ میجر عمر دہشتگردوں کو نقصان پہنچاتے ہوئے زخمی ہوئے ہیں۔

آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ 75ویں یوم آزادی کے موقع پر سکیورٹی فورسز قوم کے ساتھ مل کر بلوچستان کے امن، استحکام اور ترقی کو سبوتاژ کرنے کی کوششوں کو ناکام بنانے کے لئے پرعزم ہیں۔