کالعدم ٹی ٹی پی سے بات چیت چل رہی ہے : وزیر دفاع

وزیر دفاع خواجہ آصف نے کہا ہے کہ پاک افغان بارڈر کے دونوں جانب ٹینشن ہے جسے حل کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ قومی اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے.

خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ عمران حکومت نے کالعدم تحریک طالبان پاکستان کو ویلکم کیا تھا اور اب خیبر پختونخوا میں ٹی ٹی پی کے خلاف جلوس نکالے جارہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ کالعدم تحریک طالبان پاکستان سے بات چیت چل رہی ہے لیکن خطرہ بڑھ رہا ہے۔طالبان کا مسئلہ صوبائی نہیں بلکہ قومی مسئلہ ہے، پاک افغان بارڈر کے دونوں جانب ٹینشن ہے جسے حل کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔

دسرے جانب قبائلی اضلاع میں امن کی بگڑتی صورتحال پر تحریک التواء جمع کر دیا ہے.

سابق سینٸر صوباٸی وزیر اور خیبر پختونخوا اسمبلی میں جماعت اسلامی کے پارلیمانی لیڈر عنایت اللہ خان نے صوباٸی اسمبلی سیکرٹریٹ میں جمع کراٸی گٸی.

تحریک التواء میں موقف اپنایا ہے کہ صوبہ خیبر پختونخوا بالخصوص ملاکنڈ ڈویژن اور سابقہ مرج اضلاع میں ایک بار پھر بدامنی کی لہر پیدا ہوئی ہے اور پے درپے ٹارگٹ کلنگ کے واقعات میں اضافہ ہو رہا ہے.

انہوں نے کہا کہ گزشتہ روز سوات میں مسلح افراد کی جانب سے ڈی ایس پی سمیت قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اعلی اہلکاروں کو یرغمال بنانے اور ضلع دیر لوئر کے علاقہ میدآن سے حکمران جماعت سے تعلق رکھنے والے رکن صوبائی اسمبلی ملک لیاقت علی کی گاڑی پر مسلح افراد کے حملے میں چار بے گناہ افراد کی شہادت  سے عوام میں شدید تشویش کی لہر پیدا ہوئی ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ لہذا ان حالات میں اس معزز ایوان میں معمول کی کاروائی کو روک کر اس انتہائی اہم عوامی مسئلے کو زیر بحث لانے کے لئے اس تحریک التواء کو بحث کے لئے منظور کیا جائے تاکہ سوات اور ملاکنڈ ڈویژن کے دیگر اضلاع سمیت سابقہ قبائلی اضلاع میں امن وامان کی روزبروز بگڑتی صورتحال کے اصل حقائق قوم کے سامنے لائے جاسکیں اور عوام میں پائی جانی والی تشویش کا سدباب ممکن ہوسکے۔