قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس طلب کر لیا گیا

قومی سلامتی کمیٹی کا ان کیمرا اجلاس قومی اسمبلی ہال میں طلب کر لیا گیا۔ قومی سلامتی کمیٹی کا ان کیمرا اجلاس قومی اسمبلی ہال میں طلب کر لیا گیا جس میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل ندیم احمد انجم قومی سلامتی امور پر بریفنگ دیں گے۔

دوسری طرف قومی اسمبلی اجلاس کے دوران حکومت نے ایک بار پھر تحریک انصاف کو ایوان کی کارروائی میں حصہ لینے کی دعوت دی ہے۔

قومی اسمبلی اجلاس میں حکومت نے صدر مملکت کی جانب سے انتخابات اور احتساب ترمیمی بل پر دستخط نہ کرنے کی مذمت کی اور کہا کہ یہ ملک عمران خان کی مرضی سے نہیں چلے گا۔

وفاقی وزیرایاز صادق نے کہا کہ صدر نے الیکشن اور نیب قوانین پر دستخط نہ کرکے پی ٹی آئی کا رکن ہونے کا ثبوت دیا ، اسپیکر قومی اسمبلی سے عمران خان کی پاکستان ٹوٹنے اور فوج کے حوالے سے بات کرنے پر کارروائی کیلئے حکومت کو خط لکھنے کا مطالبہ کر دیا۔

قومی اسمبلی کا اجلاس اسپیکر راجہ پرویز اشرف کی صدارت میں ہوا۔ اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے وفاقی وزیر برائے اقتصادی امور سردار ایاز صادق نے کہا کہ صدر عارف علوی کا طریقہ کار درست نہیں ، وہ آئین پاکستان سے اس طرح کھیلنے کی کوشش نہ کریں.

انہوں نے کہا کہ عمران خان کنپٹی پر پستول رکھ کر الیکشن نہیں لے سکتے ، ہم انہیں پہلے کی طرح دعوت دیتے ہیں، گالیاں بہت دے لیں اب آئیں ایوان میں بیٹھیں۔قومی اسمبلی کا اجلاس منگل دوپہر ڈیڑھ بجے تک ملتوی کر دیا گیا۔