ٹی ٹی پی کی بات سننے کو تیار ہیں

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید کا کہنا ہے کہ ٹی ٹی پی کی بات ہم سننے کو تیار ہیں، مگر پاکستان کی سالمیت سے ٹکرانے والوں سے ٹکرایا جائے گا۔

سینیٹ میں اظہار خیال کرتے ہوئے وزیر داخلہ شیخ رشید کا کہنا تھا کہ 15 اگست سے لے کر اب تک دہشت گردی کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے، بھارتی ایجنسی را دہشت گردی کے لیے پاکستانی کرمنلز کو استعمال کر رہی ہے.

انہوں نے کہا کہ اب تک راولپنڈی اسلام آباد میں 10 پولیس والے ٹارگٹ ہوئے 2 دہشت گرد پکڑے گئے، داسو اور گوادر واقعات میں گرفتاریاں کی ہیں، فیصلے عدالتوں نے کرنے ہیں، ہمیں دہشت گردی کے خلاف ایک بیانیہ بنانا چاہیئے، خوشی ہے کہ اپوزیشن بنچز بھی دہشتگردی کی مذمت کرتے ہیں، دہشت گردی کے مقِابلے میں ہم اپوزیشن کے ساتھ ہیں۔

وزیر داخلہ نے کہا کہ بھارت کبھی نہیں چاہتا کہ پاکستان اور طالبان کے بہتر تعلقات ہوں، اب دہشت گردوں سے کوئی مذاکرات نہیں ہو رہے۔

وفاقی وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ ہم ٹی ٹی پی کی بات سننے کے لئے تیار ہیں، لیکن پاکستان کی سالمیت سے ٹکرانے والوں سے ٹکرایا جائے گا، افواج پاکستان دہشتگردی سے نمٹ رہی ہے، جہاں کوئی سر اٹھاتا ہے، وہاں ایکشن لیا جاتا ہے.

انہوں نے کہا کہ پاکستان اپنی سالمیت پر حرف نہیں آنے دے گا، ملک میں کسی قیمت پر دہشتگردی کی اجازت نہیں دیں گے۔

شیخ رشید کا کہنا تھا کہ میرے بارے میں اپوزیشن جو مرضی کہے، سیاست چلتی رہتی ہے، ہمارا کام ان کو سمجھانا ہے، دہشت گرد کسی کا نہیں ہوتا، بے نظیر کی منت سماجت کی کہ اسلام آباد میں جلسہ نہ کریں.

انہوں نے کہا کہ فضل الرحمان اور مجھ پر بھی دہشت گردی کے حملے ہوچکے ہیں، میں کووڈ کے خطرے کا نہیں کہتا، بلکہ 23 مارچ کو او آئی سی کے لئے ساری دنیا سے 100 سے زائد ممالک کے سربراہ آرہے ہیں اور راستے بند ہوں گے.

انہوں نے خبر دار کیا کہ اس دن فون بند ہوں گے، سگنل بند ہوں گے، اپوزیشن کا شام کو ٹی وی پر شو کیسے چلے گا، ان سے گزارش ہے کہ 23 کے بعد 27 مارچ کو آجائیں، میں ڈرا نہیں رہا شوق سے یہ آجائیں۔