غیر ملکی ٹیم کے ٹو پر سرمائی مہم کے لیے پہنچ گئی

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

دنیا کی دوسری بلند ترین چوٹی کے ٹو پر سرمائی مہم کا آغاز ہو گیا۔ کے ٹو ونٹر ایکسپڈیشن 2022 کیلئے تائیوان کی معروف خاتون کوہ پیما کی قیادت میں غیر ملکی کوہ پیمائوں کی ٹیم پاکستان پہنچ گئی۔

آئندہ ایک دو روز میں غیر ملکی کوہ پیما سکردو سے اسکولی روانہ ہوگی۔ الپائن کلب آف پاکستان کے مطابق تائیوان کی کوہ پیما گریس تیسنگ کی قیادت میں شامل غیر ملکی کوہ پیمائوں کی ٹیم میں نیپال کے کوہ پیما چھیرنگ، نیما شرپا، داوا شرپا، فیوری، نگیما، ننگما دورجے اور تاشی شیرپا شامل ہیں۔

یاد رہے کہ گزشتہ سال تاریخ میں پہلی مرتبہ نیپالی کوہ پیمائوں نے موسم سرما میں کے ٹو کو سر کر کے تاریخ رقم کی تھی۔ گزشتہ سال کے ٹو پر سرمائی مہم کے دوران پاکستان کے معروف کوہ پیما محمد علی سدپارہ اور ان کے دو غیر ملکی ساتھی کے ٹو سر کرنے کے دوران لاپتہ ہو گئے تھے۔

جن کی موت کا باقاعدہ اعلان کیا گیا۔ کئی ماہ بعد محمد علی سدپارہ کے بیٹے ساجد سدپارہ نے تلاش مہم کے دوران اپنے والد سمیت تینوں کوہ پیمائوں کی لاشوں کو کے ٹو کی سات ہزار میٹر کی بلندی پر برآمد کر لیا۔

زیادہ اونچائی کی وجہ سے لاشوں کو واپس نہ لایا جا سکا جس کے بعد چوٹی پر ہی امانتاً تدفین کر دی گئی تھی۔ قومی ہیرو محمد علی سدپارہ کی موت نے پورے ملک کو غمزدہ کر دیا جن کی یادیں آج بھی عوام کے دلوں میں زندہ ہیں۔

اس سانحے کے بعد یہ پہلی مہم ہے جو سردیوں کے موسم میں کے ٹو پر شروع کی جا رہی ہے۔ دنیا کی دوسری بلند ترین چوٹی کے ٹو کو پیچیدہ راستوں اور موسم کی وجہ سے موسم سرما میں وحشی پہاڑ بھی کہا جاتا ہے۔