مری میں سیاحوں سے ناجائز منافع لینے پر 15 ہوٹلز سیل

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

سانحہ مری کے بعد سیاحوں سے ناجائز منافع کمانے والے ہوٹلوں کیخلاف پنجاب حکومت و ضلعی انتظامیہ حرکت میں آگئی۔

حکام کے مطابق چند دنوں قبل پیش آئے سانحہ مری کے بعد ناجائز منافع خوروں کیخلاف ایکشن لیتے ہوئے پنجاب حکومت و ضلعی انتظامیہ نے ہوٹلوں کو سیل کرنا شروع کردیا ہے۔

مری کے ہوٹلوں میں سیاحوں سے اوور چارجنگ کی شکایات پر اب تک 15 ہوٹلز سیل کیے جاچکے ہیں۔

ہوٹلوں کی جانب سے اوور چارجنگ کی شکایات سوشل میڈیا اور مری کنٹرول روم میں وصول ہوئیں تھیں جن کے خلاف انتطامیہ نے سخت ایکشن لیا

میڈیا رپورٹ کے مطابق ابوظہبی روڈ، گلڈنہ روڈ، اپر جھیکا گلی روڈ اور بنک روڈ پر واقع پندرہ مختلف ہوٹلز کو سیل کردیا گیا۔

مری میں سیاحوں کو مدد کے بہانے لوٹنے والا ملزم گرفتار

مری میں سڑک پر برف پھینک کر سیاحوں سے مدد کے بہانے رقم ہتھیانے والے ملزم کو گرفتار کرلیا گیا۔

مری میں سڑک پر برف پھینک کر سیاحوں کو مدد کے بہانے لوٹنے والا ملزم پولیس کی گرفت میں آگیا، ملزم ثاقب عباسی کے زیر استعمال جیپ بھی قبضے میں لے لی گئی۔

پولیس کے مطابق ملزم ساتھیوں کے ساتھ مل کر سڑک پر برف بکھیرتا تھا، جب کسی سیاح کی گاڑی پھنس جاتی تو جیپ سے ٹوہ کرکے نکالنے کا بھاری معاوضہ لیتا تھا۔

ذرائع کے مطابق سیاحوں کی شکایات سامنے آنے پر سی پی او نے ملزمان کی گرفتاری کا حکم دیا تھا، سی پی او کے احکامات پر گزشتہ روز نامعلوم ملزمان کے خلاف واقعے کا مقدمہ درج کیا گیا تھا۔

سی پی او ساجد کیانی کا کہنا ہے کہ ملمز کے دیگر ساتھیوں اور سہولت کاروں کو بھی گرفتار کیا جائے گا، سیاحوں کی مجبوری کا فائدہ اٹھانے والے قانون کی گرفت سے نہیں بچیں گے۔

واضح رہے کہ مری میں گزشتہ دنوں حادثے میں 22 افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ برف کے طوفان سے درخت سڑک پر گرے جس سے سڑک بلاک ہوئی، زیادہ تر لوگ گاڑیاں چھوڑ کر پیدل نکل گئے کیونکہ برف کے طوفان کی وجہ سے مشینری ، ہیلی کاپٹر کا جانا مشکل تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ طوفان سے بچنے کیلئے لوگ گاڑیوں میں ہیٹر لگا کر سوگئے ، اموات کاربن مونوآکسائیڈ کی زیادتی کی وجہ سے ہوئیں، وزیراعظم نے سانحہ مری پر افسوس کا اظہار کیا۔