جنوبی وزیرستان کے فیز 3 سروے، مشتبہ افراد،وجہ سامنے آگئی۔

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

جنوبی وزیرستان میں ہونے والے تباہ شدہ مکانات کے سروے میں ایک اور مسلہ سامنے آگیا ہے۔ چند روز قبل ٹرائبل بارڈر نیوز کو انتظامیہ کی جانب سے چند صحفوں پر مشتمل ایک لسٹ موصول ہوئی ہے جس میں سو سے زائد افراد کو مشتبہ قرار دیا گیا ہے۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ مذکورہ افراد کو مشتبہ اس لئے قرار دیا گیا ہے کہ ایک مکان میں ایک ہی خاندان کے کئی افراد نے سروے کیا ہے اسی لئے ان افراد کو مشتبہ قرار دیا گیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق اکثر کا تعلق تحصیل سرویکئی کے علاقے نانو سے ہے۔
نانو کے علاوہ ایک اور گاوں کے افراد بھی مشتبہ قرار دئے گئے ہیں مگر اس رپورٹ میں گاوں کا ذکر نہیں کیا گیا ہے بلکہ نام اور شناختی کارڈ نمبر کے آگے ایک خانے میں مشتبہ کا لفظ درج ہے۔

باوثوق ذرائع کے مطابق مشتبہ افراد کی تعداد اس سے کئی گناہ زیادہ ہوسکتی ہے کیونکہ قبائلی علاقے بالخصوص جنوبی وزیرستان میں ایک ہی مکان میں کئی کئی خاندان آپریشن سے قبل رہائش پذیر تھے اور انہی افراد نے اپنے ہی مکانوں میں سروے کیا ہے لہذا ایک گھر میں کئی افراد سروے کرنے کے مستحق ہیں ۔

واضح رہے چھ ماہ قبل انتہائی ذمہ دار آفیسر نے یہ بات ایک میٹنگ کے دوران کی تھی کہ نہ صرف فیز فور سروے کی سکروٹنی سخت کی جارہی ہے بلکہ فیز تھری سروے کے لئے بھی سخت قانون بنایا گیا ہے۔

اس مسلےکی تصدیق ایک ذمہ دار آفیسر نے بھی کردی ہے اور کہا ہے کہ مشتبہ افراد کی لسٹ کا اصل مسلہ یہی ہے کہ ایک ہی گھر میں کئی افراد نے کیوں سروے کیا ہے؟