پاکستان کو انتہائی مطلوب دہشتگرد محمد خراسانی افغانستان میں ہلاک

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

پاکستان کے امن کا دُشمن ایک انتہائی مطلوب دہشت گرد محمد خراسانی مارا گیا۔

تفصیلات کے مطابق تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کا ترجمان دہشت گرد محمد خراسانی افغانستان کے صوبے ننگرہار میں مارا گیا۔

دہشت گرد محمد خراسانی تحریک طالبان پاکستان کا ترجمان تھا اور اس کا اصل نام خالد بلتی تھا، محمد خراسانی میرانشاہ میں دہشت گردی کا مرکز چلا رہا تھا۔

آپریشن ضربِ عضب کی کامیابی کے بعد محمد خراسانی افغانستان بھاگ گیا تھا، وہ شاہد اللہ شاہد کے بعد کالعدم ٹی ٹی پی کا ترجمان بنا تھا۔

محمد خراسانی معصوم عوام اور سکیورٹی فورسز پر حملوں میں ملوث تھا، وہ ٹی ٹی پی کے مختلف دھڑوں کو متحد کرنے میں بھی مصروف تھا اور ٹی ٹی پی کے سربراہ مفتی نور ولی محسود کے ساتھ مل کر پاکستان کے خلاف دہشت گردانہ کارروائیوں کی منصوبہ بندی کر رہا تھا۔

واضح رہے کہ ٹی ٹی پی دہشت گرد محمد خراسانی نے حال ہی میں پاکستان کے اندر مختلف کارروائیوں کا اشارہ بھی دیا تھا۔

محمد خراسانی کو ترجمان کیوں مقرر کیا ؟

کالعدم تحریک طالبان پاکستان نے شاہد اللہ شاہد کو معزول کرتے ہوئے محمد خراسانی کو اپنا نیا ترجمان مقرر کر دیا ہے۔

جنگجو تنظیم کی جانب سے جاری ایک بیان میں نئے ترجمان کے اعلان کے ساتھ ساتھ خیبرایجنسی میں جاری فوجی آپریشن میں لشکرِاسلام کے ساتھ دینے کا اعلان کر دیا ہے۔

پاکستانی سیکیورٹی فورسز نے آپریشن ضرب عضب کے ساتھ ساتھ خیبرایجنسی میں بھی آپریشن خیبرون کا آغاز کیا ہوا ہے جس کا مقصد فرار ہونے والے دہشت گردوں کا خاتمہ ہے۔

تحریک طالبان نے کہا ہے کہ اس کے جنگجو اب ملا فضل اللہ کی قیادت میں لشکر اسلام کا ساتھ دیں گے اور سیکیورٹی فورسز اورحکومت کے خلاف لڑیں گے۔

بیان کے مطابق تنظیم کی مرکزی رہبری شوریٰ نے شاہد اللہ شاہد کو معزول کرکے محمد خراسانی کو تنظیم کا نیا ترجمان بھی مقرر کردیا ہے۔

یاد رہے کہ ٹی ٹی پی کے سابق ترجمان شاہد اللہ شاہد نے دولت اسلامیہ عراق وشام (داعش) کا ساتھ دینے کا اعلان کیا تھا۔