ہندو عبادتگاہوں کے تحفظ کیلئے مندر منیجمنٹ کمیٹی تشکیل دیدی

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

حکومت نے ملک میں ہندوؤں کی عبادت گاہوں کے تحفظ کے لیے مندر منیجمنٹ کمیٹی تشکیل دے دی۔

تفصیلات کے مطابق ہندو مندر مینجمنٹ وزارتِ مذہبی امور کے ماتحت کام کرے گی، جس کی صدارت وفاقی وزیر برائے مذہبی امو و بین المذاہب ہم آہنگی کے پاس ہوگی۔

وزارتِ مذہبی امور کی جانب سے قائم کی گئی کمیٹی میں کرشن شرما، دیوان چاند چاؤلہ، ہارون سرب دیال، موہن داس، نرنجن کمار، میگھا اروڑا، امیت شادانی، اشوک کمار، ورسی مل دیوانی، امر ناتھ رندھاوا شامل ہیں۔

چیئرمین متروکہ وقف املاک بورڈ نے نئی تشکیل شدہ ہندو مندر منیجمنٹ کمیٹی کو بریفنگ دی، جس کے بعد وفاقی وزیر برائے مذہبی امور پیر نورالحق قادری کی زیر صدارت ا کمیٹی کا پہلا اجلاس ہوا۔

شرکاء سے گفتگو کرتے ہوئے نور الحق قادری نے کہا کہ شر پسند عناصر مذہب، فرقہ اور لسانیت کی بنیاد پر پاکستان میں تصادم چاہتے ہیں جس کو ہم مل کر ناکام بنائیں گے، نئی ہندو کمیٹی غیرمسلم آبادی اور ریاست کے درمیان پل کا کام کرے گی۔

انہوں نے بتایا کہ پاکستان ہندو عبادت گاہوں کی دیکھ بھال کے امور بھی یہی کمیٹی دیکھے گی۔اس موقع پر ہندو کمیٹی کے صدر نے کہا کہ حکومت پاکستان نے کمیٹی تشکیل دے کر ہماری برادری کا دیرینہ مطالبہ پورا کر کے نئی تاریخ رقم کردی۔

کرشن شرما نے ہندو برادری کے مسائل کو حل کرنے کے لیے پلیٹ فارم فراہم کرنے پر بھی حکومت کا شکریہ ادا کیا۔