خیبرپختونخوا بلدیاتی انتخابات میں جے یو آئی (ف) 18 نشستوں پر کامیاب

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

اپوزیشن جماعت جمعیت علمائے اسلام (ف) نے مزید 2 تحصیل کونسلوں کی چیئرمین شپ جیت لی جس کے بعد بلدیاتی انتخابات کے نتیجے میں اس کی حاصل کردہ نشستوں کی تعداد 17 ہو گئی۔

ذرائع کے مطابق صوبائی الیکشن کمیشن نے 19 دسمبر کو ہونے والے انتخابات میں اب تک 47 تحصیلوں کا نتیجہ جاری کیا ہے جس میں جے یو آئی (ف) کو برتری حاصل ہے۔

علاوہ ازیں حکمراں جماعت پاکستان تحریک انصاف(پی ٹی آئی) 12 تحصیلوں کی چیئرمین شپ حاصل کرنے میں کامیاب رہی۔

صوبائی دارالحکومت میں جے یو آئی (ف) کے امیدوار حاجی زبیر علی کو 62 ہزار 388 ووٹس کے ساتھ پی ٹی آئی کے امیدوار رضوان بنگش کے 5 ہزار 659 ووٹوں پر 11 ہزار کی برتری حاصل ہے۔

تاہم میئر کے انتخاب کا نتیجہ ای سی پی نے 6 پولنگ اسٹیشنز پر نقصِ امن کے باعث 6 پولنگ اسٹیشنز پر ووٹنگ ملتوی ہونے کے باعث روک دیا ہے۔

مبصرین کا کہنا ہے کہ زبیر علی کی برتری اتنی زیادہ ہے کہ 6 پولنگ اسٹیشنز پر دوبارہ ووٹنگ کے نتیجے میں بھی اس کے برقرار رہنے کا امکان ہے۔

صوبائی دارالحکومت کی بقیہ چھ تحصیل چیئرمینوں کی نشستوں میں سے جے یو آئی (ف) نے 4 نشستیں حاصل کیں جبکہ پی ٹی آئی اور اے این پی نے تحصیل کونسل کی ایک ایک نشست جیت لی۔

حکمراں جماعت پی ٹی آئی نے 14 اراکین صوبائی اور 5 اراکین قومی اسمبلی ہونے کے باوجود صوبائی دارالحکومت میں بری کارکردگی کا مظاہرہ کیا اور 7 تحصیلوں میں سے صرف ایک کی چیئرمین شپ حاصل کر سکی۔

ان دونوں جماعتوں کے علاوہ آزاد امیدواروں نے تیسری اکثریت حاصل کی اور صوبے کے مختلف علاقوں سے 7 تحصیلوں کی چیئرمین شپ نشستیں حاصل کرنے میں کامیاب رہے۔

اس کے بعد عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) نے تحصیل کونسل چیئرمین کی 6، مسلم لیگ (ن) نے جبکہ جماعت اسلامی، پیپلز پارٹی اور تحریک اصلاحات پاکستان نے ایک ایک نشست جیتی۔

خیبرپختونخوا کے 17 اضلاع کی 63 تحصیلوں میں بلدیاتی انتخابات ہوئے تھے جس میں سے الیکشن کمیشن نے 47 کامیاب امیدواروں کے نام جاری کیے ہیں جبکہ بقیہ نتائج دوبارہ پولنگ کے باعث روک لیے ہیں یا بعد میں جاری کیے جائیں گے۔

الیکشن کمیشن نے ضلع کرک اور لکی مروت کے4، 4 تحصیلوں میں سے کسی ایک کے بھی نتیجے کا اعلان نہیں کیا جبکہ خیبر کی 2 مہمند کی ایک، ڈیرہ اسمٰعیل خان کی ایک جبکہ باجوڑ کی 2 تحصیلوں کا نتیجہ بھی ابھی تک نہیں آیا۔

صوبائی الیکشن کمشنر نے کوہاٹ، ڈیرہ اسمٰعیل خان اور بنوں اضلاع کی تین تحصیلوں میں الیکشن روک دیا تھا۔

اس حوالے سے ایک ای سی پی عہدیدار نے میڈیا کو بتایا کہ جن علاقوں میں دوبارہ پولنگ ہوگی ان کے اعداد و شمار اب تک مرتب نہیں کیے گئے ہیں، ہم اس معاملے پر کام کررہے ہیں اور آئندہ چند روز میں تفصیلات فراہم کریں گے۔

دسری جانب گزشتہ روز لکی مروت کی تحصیل بیٹینی میں آزاد امیدوار کی کامیابی کی اطلاع موصول ہوئی تھی تاہم آج ہونے والی دوبارہ گنتی میں اس تحصیل کی چیئرمین کی نشست پر بھی جے یو آئی کے امیدوار مولانا انور بادشاہ کامیاب قرار پائے .

میڈیا رپورٹ کے مطابق اس طرح جے یو آئی کی تحصیل چیئرمین کی نشستوں کی تعداد 18 اور آزاد امیدواروں کی تعداد کم ہوکر 8 ہوگئی۔

خیبر پختونخوا میں بلدیاتی انتخابات کے پہلے مرحلے میں 19 دسمبر کو صوبے کے 17 اضلاع کی 61 تحصیل کونسلز (چیئرمین) کی نشستوں میں سے 60 اور 5 سٹی کونسلز (میئرز) کی نشستوں میں سے 4 پر پولنگ ہوئی جن کے نتائج تقریباً مکمل ہوچکے ہیں۔

چیئرمین تحصیل کونسل کی جس ایک نشست پر پولنگ نہیں ہوئی وہ بنوں کی تحصیل بکا خیل ہے جہاں پولنگ اسٹیشن میں ہنگامہ آرائی کے بعد پولنگ ملتوی کردی گئی تھی۔

اس کے علاوہ سٹی کونسل کی بھی ایک نشست ڈی آئی خان پر پولنگ نہیں ہوئی۔ اس نشست پر اے این پی کے امیدوار کو قتل کیے جانے پر پولنگ ملتوی ہوئی۔ یعنی مجموعی طور پر تحصیل کونسلز کی 60 اور سٹی کونسلز کی 4 نشستوں پر انتخابات ہوئے۔

17 اضلاع کی 60 تحصیل کونسلز کے نتائج

اب تک 60 تحصیل کونسلز میں چیئرمین کی نشست کیلئے ہونے والے الیکشن میں سے 51 کے نتائج سامنے آچکے ہیں جن کی تفصیل درج ذیل ہے۔