جنوبی وزیرستان کے تمام دفاتر کو ہیڈکوارٹر منقل کیا جائے

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

قبائلی ضلع جنوبی وزیرستان وانا میں نو اقوام پر مشتمل احمدزئی وزیر قبائل کا ضلع ٹانک میں جنوبی وزیرستان کے نام پر قائم دفاتر ودیگر مقامی مسائل کے حوالے سے گرینڈ جرگہ منعقد ہوا جس میں لوگوں نے سینکڑوں کی تعداد میں شرکت کی۔

ملک اجمل کاکاخیل، ملک جمیل وزیر، ملک رحمت اللہ،ملک شیریار، سیداللہ خان، ملک شیرین جان، اور ملک بسم اللہ سمیت ایم این اے علی وزیر اور ایم پی اے نصیراللہ وزیر پر مشتمل جرگہ نے اعلیٰ حکام مطالبہ کیا کہ مغوی ڈاکٹر نورحنان کی بازیابی کے لیے سکیورٹی فورسز اور مقامی ضلعی انتظامیہ بھرپور کردار ادا کریں۔

جرگہ نے یہ مطالبہ بھی کیا کہ 120 کلومٹر دور ضلع ٹانک میں جنوبی وزیرستان کے نام پر قائم جوڈیشل کمپلیکس سمیت تمام دفاتر کو ہیڈکوارٹر وانا منقل کیا جائے اور ساتھ ساتھ کلاس فور ملازمین سے لیکر گریڈ 15 تک مقامی ڈومیسال ہولڈرز جوانوں کو بھرتی کیا جائے۔

جرگہ نے مزید مطالبات کرتے ہوئے کہاکہ گرداوی چیک پوسٹ سے لیکر پاک افغان بارڈر انگور اڈہ گیٹ تک رشوت لینے اور بھتہ خوری کو فوری طور پر بند کیا جائے اور انگور اڈہ گیٹ کو طورخم طرز پر کھول دیا جائے۔

احمدزئی وزیر قبائل نے مقامی ضلعی انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ دوتانی اور زلی خیل قبائل کے مابین کرکنڑہ زمینی تنازعہ کو انگریز مسل (ریکارڈ) کے ذریعے حل کیاجائے۔