اوآئی سی اجلاس، ’طالبان کو مدعو کرنے سے متعلق بات چیت جاری‘‏

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) وزراخارجہ کا غیرمعمولی اجلاس 19 دسمبر کو اسلام آباد میں ہو گا جس میں 57 ‏ممالک سے مندوبین کی شرکت متوقع ہے۔ ‏

اجلاس میں خصوصی طور پر پی فائیو ممالک کو بھی مدعو کیا گیا ہے۔ وزارت خارجہ حکام کا کہنا ہے کہ طالبان ‏کو مدعو کرنے سے متعلق بات چیت جاری ہے طالبان کو کس حیثیت میں بلایا جائے گا اس کا فیصلہ نہیں ہوا۔

حکام کے مطابق طالبان حکومت کے نمائندوں کی موجودگی بھی ضروری ہے اجلاس میں شرکت کیلئےدعوت نامے ‏بھیج دیئےگئےہیں وزرائےخارجہ کونسل اجلاس میں افغانستان کی نمائندگی بھی ہونی چاہیے دیگرممالک کی ذمہ ‏داری ہے افغانستان میں امن کیلئےکردار ادا کریں۔

حکام کا کہنا ہے کہ اجلاس میں عملی اقدامات لئےجائیں گےجس سےافغانستان کوفائدہ ہوگا اجلاس میں ‏پاکستان میں افغان مہاجرین کےحوالےسےبھی بات چیت ہو گی پاکستان چاہتا ہے افغانستان کی معاشی و ‏اقتصادی مدد کیلئےدنیا کردار ادا کرے۔

واضح رہے کہ وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ پاکستان 19دسمبر کو اوآئی سی کی اسلام آباد میں ‏سیشن کی میزبانی کرے گا افغانستان میں فوری امداد نہ پہنچائی گئی تو معاشی بحران پیدا ہو سکتا ہے ، یہ ‏بحران ہمسائیوں اور پورے خطے کیلئے نقصان دہ ہو گا۔

ان کا کہنا تھا کہ اگر افغانستان پر فوری توجہ نہ دی تو3.2 ملین بچےکم خوراک کاشکارہوسکتے ہیں، اس قسم کا ‏افغانستان کی صورتحال پر اجلاس 41 سال بعد ہورہا ہے، 18تاریخ کو اوآئی سی ممالک کے سینئر افسران آچکے ہوں ‏گے۔

شاہ محمود قریشی نے مزید کہا کہ پاکستان نے امریکہ،روس،چین،فرانس اوربرطانیہ، جرمنی،جاپان،کینیڈا اور ‏آسٹریلیا کے نمائندوں کو دعوت دے رہے ہیں، ہم افغانستان کے اعلی سطح کے نمائندوں کو بھی بلا رہے ہیں، ‏افغانستان کے نمائندے دنیا کو اپنے حالات کے بارے میں بتائیں گے۔