کشتی میں آتشزدگی، پاک نیوی میدان میں آگئی

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

پاک بحریہ کےجہاز پی این ایس رسدگار نے شمالی بحیرہ عرب میں ریسکیو آپریشن کیا ہے۔

ترجمان پاک بحریہ کے مطابق کراچی کے ساحل سےدور ماہی گیروں کی کشتی میں آتشزدگی کا واقعہ پیش آیا، سیکیورٹی گشت کے دوران پاک بحریہ کےجہازنے کشتی میں لگی آگ کامشاہدہ کیا۔

ترجمان کے مطابق پاک بحریہ کےجہاز پی این ایس رسدگار نے شمالی بحیرہ عرب میں پہنچ کر ریسکیو آپریشن کیا، پی این ایس نے فوری کارروائی کرتے ہوئے ماہی گیروں کوبچالیا۔

ترجمان پاک بحریہ کے مطابق سفینہ پائی خیل نامی کشتی پر 16 ماہی گیر سوار تھے، ماہی گیروں کو طبی امداد کے لئے قربی اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔

رواں سال پاکستان نیوی کی یہ دوسری بڑی کارروائی ہے، اس سے قبل اگست میں پاکستان نیوی اور پاکستان میری ٹائم ایجنسی نے کھلے سمندر میں ریسکیو آپریشن کرتے ہوئے شام سے تعلق رکھنے والے 15 افراد کو بچایا تھا۔

پی ایم ایس اے کمانڈر کے مطابق ایم وی سوواری ایچ نامی جہاز بھارت سے صومالیہ کی طرف جارہا تھا، جسے پاکستان کی سمندری حدود میں حادثہ پیش آیا۔

دسری جانب پاکستان نیوی اور پاکستان میری ٹائم ایجنسی نے کھلے سمندر میں ریسکیو آپریشن کر کے شام سے تعلق رکھنے والے 15 شامیوں کو بچا لیا۔

پاک نیوی اور پی ایم ایس اے نے کراچی کے جنوبی سمندر میں ایم وی سوواری ایچ کے 15 عملے کو بچانے کے لیے سرچ آپریشن کیا اور پی ایم ایس ایس کشمیر عملے باحفاظت کراچی پورٹ پر پہنچا دیا۔

پی این ایس کا جہاز اسلط بھی دیگر عملے کو لے کر پورٹ پر پہنچے گا۔ نیوی ترجمان کے مطابق ڈوبنے والے جہاز میں چینی اور چاول کے کنٹینر تھے، جس پر ملک شام سے تعلق رکھنے والا عملہ سوار تھا۔

پاکستان میری ٹائم ایجنسی کے ڈائریکٹر آپریشنز کمانڈر احسان نے شامی ملازمین کو ریسکیو کرنے کے حوالے سے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ’یہ ہمارے لیے اعزاز ہے کہ ہم نے کامیاب سرچ اور ریسکیو آپریشن کیا‘۔

انہوں نے بتایا کہ ’دو روز پہلے ہماری سمندری حدود میں بھارت سے صومالیہ جانے والا مرچنٹ شپ ڈوب گیا تھا، جس کے قریب سے گزرنے والے جہاز کو ایمرجنسی سگنل ملے اور پھر پاکستان نیوی کے ہوائی جہاز کو سگنل بھیجے گئے، جس کے بعد پی ایم ایس اے اور پاک نیوی کے ہوائی جہازوں نے عملے کی نشاندہی کی‘۔

کمانڈر احسان نے بتایا کہ قریب سے گزرنے والے بحری جہاز نے عملے کے کچھ ارکان کو بچا لیا تھا، بقیہ کو پاک بحریہ اور پی ایم ایس اے نے بچایا البتہ 3 لاپتہ افراد کی تلاش بھی جاری ہے۔ انہوں نے بتایا کہ گزرتے وقت کیساتھ گمشدہ عملے کے بچنے کی امید کم ہورہی ہے۔

پی ایم ایس اے کمانڈر کے مطابق ایم وی سوواری ایچ نامی جہاز بھارت سے صومالیہ کی طرف جارہا تھا، جسے پاکستان کی سمندری حدود میں حادثہ پیش آیا۔

سی او پی ایم ایس ایس کشمیر کیپٹن محمد ارسلان خان نے بتایا کہ جہاز کا انجن خراب ہوگیا تھا، جسے عملے نے ٹھیک کرنے کی بھی کوشش کی مگر سمندر میں طغیانی کے باعث جہاز ڈوب رہا تھا، اسی وجہ سے عملہ کھلے سمندر میں گر گیا تھا۔