زمانہ امن میں حقیقی تربیت لازمی ہے : آرمی چیف

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے فوج ملک کو تمام خطرات سے بچانے کیلیے پرعزم اور آپریشنل تیاریوں پر توجہ مرکوز کیے ہوئے ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق نیشنل سکیورٹی ورکشاپ کے شرکاء نے جی ایچ کیو کا دورہ کیا، انھیں سلامتی کی صورتحال اور درپیش چیلنجوں سے آگاہ کیا گیا۔

اس موقع پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ قومی سلامتی کے چیلنجوں سے نمٹنے کے لیے مشترکہ قوی جواب دینے کی ضرورت ہے.

انہوں نے کہا ہے کہ پاکستان دہشت گردی کے خلاف جنگ میں مضبوط بن کر ابھرا، اب قوم کی خوشحالی اور ترقی کے لئے دل لگا کر کام کرنا اجتماعی ذمہ داری ہے۔

دسری جانب آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا ہے کہ کسی بھی مہم جوئی کا مقابلہ کرنے کے لیے زمانہ امن میں حقیقی تربیت لازمی ہے، آپریشنل ڈرلز کی مسلسل پریکٹس خطرات کے مؤثر جواب کے لیے اہم ہے۔

آئی ایس پی ار کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کھاریاں کا دورہ کیا اور کور لیول کی مشقوں کے اختتامی مرحلے کا مشاہدہ کیا۔

مشقوں کا مقصد آرمی وار گیمز کے آپریشنل تصورات کو جانچنا تھا جبکہ فارمیشنز کی آپریشنل تیاریوں، مختلف دفاعی و جارحانہ ٹاسک پورے کرنا مشقوں کا مقصد تھا۔

مشقوں میں وی ٹی فور ٹینک، فضائی مدد سمیت جدید ویپن سسٹمز کا استعمال کیا گیا۔ آرمی چیف نے مشقوں میں شریک دستوں کی آپریشنل تیاریوں اور پروفیشنلزم کو سراہا۔

آرمی چیف نے فوج میں نئے شامل کردہ چینی وی ٹی فور ٹینکوں کی کارکردگی پر مکمل اطمینان کا اظہار کیا۔

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ کسی بھی مہم جوئی کا مقابلہ کرنے کے لیے زمانہ امن میں حقیقی تربیت لازمی ہے، آپریشنل ڈرلز کی مسلسل پریکٹس خطرات کے مؤثر جواب کے لیے اہم ہے۔

مشقوں کے علاقے میں آمد پر کور کمانڈر ون کور لیفٹیننٹ جنرل شاہین مظہر محمود نے آرمی چیف کا استقبال کیا۔ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کو مشقوں پر جامع بریفنگ بھی دی گئی۔