قبائلی اضلاع کے43 کالجزکیلئے ٹرانسپورٹ سہولت فراہم کرنے کے احکامات جاری

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

 

خیبرپختونخوااسمبلی کوبتایاگیاکہ صوبائی حکومت قبائلی اضلاع کی 43کالجزکیلئے ٹرانسپورٹ سہولت کے احکامات جاری کرچکی ہے جسکے بعد یہ اضلاع بندوبستی اضلاع سے آگے چلے جائیں گئے، قبائلی علاقوں میں امسال نئی12ڈگری کالجزبنائے جائیں گے ایوان میں اخبارات کو ملنے والے اشتہارات کی رپورٹ بھی پیش کی گئی

یہ بات صوبائی وزیراعلیٰ تعلیم کامران بنگش نے وقفہ سوالات کے دوران بتائی قبل ازیں پی پی کی رکن نگہت اورکزئی نے سوال کیاکہ ضلع مہمندمیں محکمہ اعلیٰ تعلیم آرکائیوزولائبریریزکے شعبے کیلئے ترقیاتی فنڈمختص کئے گئے لیکن ریلیزہونے کے باوجود خرچ نہیں ہوتے یہ قبائلی اضلاع کے عوام کیساتھ ظلم ہے

صوبائی وزیر اعلیٰ تعلیم کامران بنگش نے کہاکہ قبائلی اضلاع کی43کالجزکیلئے ٹرانسپورٹ سہولت کے احکامات جاری کرچکے ہیں یہ اضلاع بندوبستی اضلاع سے آگے چلے جائیں گئے امسال نئی12ڈگری کالجزبن رہے ہیں بتایاجائے کہ تین سالوں میں یونیورسٹیاں بن سکتی ہیں ماضی میں کتنی جامعات بنیں اسکاحساب بھی ایوان میں پیش کی جائے موجودہ دورمیں جتناکام ہوا ہے ماضی میں اسکی مثال نہیں ملتی

قبائلی اضلاع کے تمام کالجزکی سولرائزیشن شروع کرچکے ہیں پہلی دفعہ قبائلی ضلع کرم میں الائیڈہیلتھ سائنس انسٹیٹیوٹ بنانے جارہے ہیں مرکزی وصوبائی حکومتیں قبائلی اضلاع کی ترقی میں سنجیدہ ہے موجودہ سال میں قبائلی ایریازکیلئے ساٹھ ارب روپے مختص کئے ہیں

۔