ایف اے ٹی ایف : پاکستان کو ایک بار پھر گرے لسٹ میں رکھنے کا فیصلہ

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (فیٹف) نے پاکستان کو ایک بار پھر گرے لسٹ میں رکھنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

پیرس میں ایف اے ٹی ایف کا 3 روزہ اجلاس ختم ہوگیا۔ فیٹف اجلاس میں حکومت پاکستان کی 27ویں شرط پر پیش رفت کا جائزہ لیا گیا جبکہ جرائم اور دہشت گردی کی مالیاتی معاونت کے خلاف عالمی کارروائی کو مضبوط بنانے کے لیے اہم امور پر تبادلہ خیال کیا گیا.

اجلاس میں منی لانڈرنگ اور دہشت گردوں کی سزاؤں سے متعلق پاکستان کی کارکردگی کو بھی جانچا گیا۔ فیٹف کے مطابق پاکستان نے منی لانڈرنگ کے خاتمے کے لیے خاطر خواہ پیشرفت کی ہے

انہوں نے کہا ہے کہ اس حوالے سے پاکستان نے 6 میں سے 4 شرائط کو پورا کر لیا ہے جبکہ باقی ماندہ تین نکات پر بھی عملدرآمد کے لیے پیشرفت جاری ہے۔

فیٹف نے پاکستان کی جانب سے منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی مالی معاونت سے متعلق اب تک کے اقدامات کا جائزہ لینے کے بعد پاکستان کو آئندہ سال فروری تک گرے لسٹ میں برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔

فیٹف کا کہنا ہے کہ بھرپور تعاون پر حکومت پاکستان کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔ اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے صدر مارکوس پلیئر نے کہا کہ پاکستان گرے لسٹ میں رہے گا.

پاکستان کو جون میں ایف اے ٹی ایف کے ریجنل شراکت دار اے پی جی کی نشان دہی پر ایکشن پلان میں بڑی حد تک منی لانڈرنگ کے مسائل تھے.

رپورٹ کے مطابق پاکستان مجموعی طور پر اس نئے ایکشن پلان پر بہتر کار کردگی دکھا رہا ہے، ایکشن پلان کے 7 میں سے 4 نکات پر عمل درآمد کیا گیا ہے

یاد رہے کہ اس میں حکام کی فنانشل نگرانی اور بین الاقوامی تعاون کے لیے قانونی ترامیم شامل ہیں۔

پاکستان کو گرے لسٹ میں رکھنے کا جواز نہیں

دسرے جانب وزارت خزانہ پاکستان نے کہا ہے کہ فیٹف کی شرائط پر 100 فیصد عملدرآمد مکمل کر لیا ہے اب مزیدفیٹف پاکستان کو گرے لسٹ میں رکھنے کا جواز نہیں بنتا.

وزارت خزانہ کا کہنا ہے کہ اگر فنانشل ایکشن ٹاسک فورس نے پاکستان کے 27 پوائنٹس پر سو فیصد کمپلائنس کو فیٹف کے ایشیاء پیسفک گروپ کے 40 پوائنٹس پر عملدرآمد سے مشروط کیا تو اس صورت میں پاکستان کو مزید کچھ عرصے کیلئے گرے لسٹ میں رکھا جاسکتا ہے۔

وزارت خزانہ ذرائع کا کہنا ہے کہ اصولی طور پر جن 27 پوائنٹس کی بنیاد پر پاکستان کو گرے لسٹ میں شامل کیا گیا تھا, پاکستان نے ان پوائنٹس پر 100 فیصد عملدرآمد مکمل کرلیا ہے، اس کے بعد پاکستان کا نام گرے لسٹ میں رکھے جانے کا کوئی جواز باقی نہیں رہتا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اگر فیٹف کے ممبر ممالک کی جانب سے تعاون نہ ملا تو اس صورت میں کمپلائنس رپورٹ کو ایشیاء پیسفک گروپ کے 40 پوائنٹس پر عملدرآمد سے مشروط کرکے مزید کچھ عرصے کیلئے مانیٹرنگ کے نام پر گرے لسٹ میں رکھا جا سکتا ہے

رپورٹ کے مطابق بھارتی لابی پاکستان کے خلاف سرگرم ہے جبکہ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (فیٹف) کے پیرس میں جاری تین روزہ اجلاس میں پاکستان کا ایجنڈا آج مکمل ہوگیا ہے، اب فیٹف کے فیصلے کا انتظار ہے, جو رات گئے کسی وقت یا جمعرات کو متوقع ہے

میڈیا رپورٹس کے مطابق پاکستان کا نام گرے لسٹ میں رکھنے یا نکالنے کا فیصلہ کیا جائے گا، اجلاس میں منی لانڈرنگ، ٹیرر فنانسنگ کیخلاف اقدامات میں پیش رفت کا جائزہ لیا گیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ فیٹف ٹیم پاکستان کی جانب سے ٹیرر فنانسنگ سمیت اب تک کی کارکردگی اور پاکستان کے زمینی حقائق اور قانون سازی کا جائزہ لیا گی

پاکستان کی جانب سے پیش کردہ سو فیصد کمپلائنس رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ پاکستان نے باقی رہ جانے والے آخری پوائنٹ پر عملدرآمد مکمل کر لیا ہے اور منی لانڈرنگ کے کیسز میں ڈیڑھ سو کے لگ بھگ سزائیں دی ہیں، جن میں کسی کے اکاونٹس منجمد کیے گئے ہیں، کسی سے ریکوری کی گئی ہے۔

ذرائع کے مطابق ٹیررازم فنانسنگ پر بھی پاکستان نے قابو پالیا ہے اور پچھلے کافی عرصے سے دہشت گردی کا کوئی بڑا واقعہ بھی پیش نہیں آیا ہے

علاوہ ازیں منی لانڈرنگ میں ملوث عناصر کو سزائیں دینے کیلئے قوانین میں بھی ترامیم کر دی گئی ہیں اور حال ہی میں فیڈرل بورڈ آف ریونیو کو بینک اکاونٹس منجمد کرنے کے اختیارات بھی بحال کر دیئے گئے ہیں

اس کے علاوہ رئیل اسٹیٹ، جیولرز، وکلاء، اکاوٴنٹنٹس جیسے پیشوں کی نگرانی میں پیش رفت کا جائزہ لیا گیا۔

ذرائع نے مزید کہا کہ پاکستان کی جانب سے فیٹف کو بھجوائی جانے والی کمپلائنس رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ پیش رفت میں منی لانڈرنگ کی تحقیقات، سزاوٴں، ملزمان کے اثاثے ضبط کرنے جیسے اقدامات بھی شامل ہیں

رپورٹ کے مطابق اب پیش رفت کی بنیاد پر نام گرے لسٹ سے نکالنے یا برقرار رکھنے سے متعلق فیصلہ ہوگا، نام گرے لسٹ سے نکالنے سے پہلے فیٹف کی تکنیکی ٹیم پاکستان کا دورہ کرسکتی ہے یا پھر پاکستان کو چند ماہ کی مزید مہلت دی جا سکتی ہے۔