حکومت نے بھنگ کی کاشت کی پالیسی لانے کا اعلان کردیا

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

وفاقی حکومت نے رواں سال دسمبر تک ملک میں بھنگ کی کاشت کی پالیسی لانے کا اعلان کردیا ہے۔

قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے سائنس اور ٹیکنالوجی کا اجلاس چیئرمین کمیٹی ساجد مہدی کی زیرِ صدارت منعقد ہوا۔

اجلاس میں کمیٹی نے نیشنل میٹرالوجی انسٹیٹیوٹ آف پاکستان کا بل منظور جبکہ نیشنل یونیورسٹی آف ٹیکنالوجی ترمیمی بل آئندہ اجلاس تک مؤخر کردیا۔ ایم این اے ریاض فتیانہ کی عدم حاضری پر بل مؤخر کیا گیا۔

اجلاس میں وفاقی وزیر نے کمیٹی کو بھنگ کی پیدواری منصوبے پر بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ سی بی ڈی آئل کا ایک لیٹر 10 ہزار ڈالر ہے، روات میں ادویات میں استعمال کے لیے بھنگ کی کاشت شروع کی گئی ہے.

انہوں نے کہا کہ بھنگ کے ایک بیج کی قیمت 12 ڈالر ہے، روات کے قریب بھنگ کے بیج بھی تیار کیے جائیں گے، 2025ء تک بھنگ کی عالمی مارکیٹ 95 ارب ڈالر تک پہنچ جائے گی، 3 سال کے لیے 1896 کا بھنگ کا منصوبہ شروع کیا گیا ہے۔

حکام نے کمیٹی کو بتایا کہ خان میں صنعتی مقاصد کے لیے بھنگ کی کاشت شروع کریں گے، پہلے مرحلے میں بھنگ کا را میٹیریل درآمد کرنا پڑے گا، گرین ہاوسز لاہور، کراچی اور اسلام آباد میں بنیں گے.

ان کا کہنا تھا کہ پی سی ایس آئی آر نے تجرباتی بنیادوں پر بھنگ سے تیل پیدا کرنا شروع کیا ہے جبکہ اے این ایف نے بھنگ کی کاشت کے لیے 4 سائٹس کی منظوری دے دی ہے۔

اس پر چیئرمین کمیٹی نے کہا کہ ہمارے ملک کا مسئلہ یہ ہے کہ را میٹیریل بیرون ملک لے جاتے ہیں۔

وفاقی وزیر نے جواب میں کہا کہ را میٹیریل کی برآمد روکنے کے لیے سخت قانون سازی کرنی ہوگی، بھنگ کے منصوبے میں سرمایہ کاری کے لیے بڑی تعداد میں لوگ آگئے

انہوں نے کہا کہ ملک میں ابھی تک بھنگ کے حوالے سے کوئی پالیسی نہیں، دسمبر تک ملک میں بھنگ کی کاشت کی پالیسی آجائے گی۔

کمیٹی اجلاس میں وفاقی وزیر شبلی فراز نے یہ بھی کہا کہ گھروں میں استعمال ہونے والی بجلی کی چیزوں میں بچت کا سوچا ہے، اس پراجیکٹ سے تین ہزار چار سو میگاواٹ کی بجلی بچے گی.

یاد رہے کہ پاکستان میں کل 24 ہزار میگاواٹ بجلی استعمال ہوتی ہے، 16 ہزار میگا واٹ صرف کولنگ کے لیے استعمال ہوتا ہے، پانی کی موٹرز میں ہم 5 ہزار میگاواٹ بجلی کی بچت کر سکتے ہیں۔

بھنگ کا ایک بیچ 12 ڈالر کا ہے اب بیج بھی تیار کریں گے

وفاقی وزیرسائنس و ٹیکنالوجی شبلی فراز نے کہا ہے کہ بھنگ کےایک بیج کی قیمت12 ڈالر ہے روات کےقریب ‏بھنگ کے بیج بھی تیار کیےجائیں گے۔

تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائےسائنس و ٹیکنالوجی کا اجلاس ہوا جس میں پی سی ایس ‏آئی آرحکام نے بھنگ کی پیداوار کے منصوبے پر بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ بھنگ کوصنعتی اورادویات میں ‏استعمال کا منصوبہ تیار کیا گیا ہے۔

وفاقی وزیر شبلی فراز نے کہا کہ سی بی ڈی آئل کا ایک لیٹر 10ہزار ڈالر ہے روات میں ادویات میں استعمال ‏کیلئےبھنگ کی کاشت شروع کی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ بھنگ کےایک بیج کی قیمت12 ڈالر ہے روات کےقریب بھنگ کے بیج بھی تیار کیےجائیں گے، ‏‏2025 تک بھنگ کی عالمی مارکیٹ 95ارب ڈالرتک پہنچ جائےگی۔

حکام نے بتایا کہ گجرخان میں صنعتی مقاصدکیلئے100ایکڑبھنگ کی کاشت شروع کریں گے اےاین ایف نےبھنگ ‏کی کاشت کیلئے4 سائٹس کی منظوری دے دی ہے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ بھنگ کےمنصوبےمیں سرمایہ کاری کیلئےسرمایہ کاردلچسپی لےرہےہیں ملک میں ابھی تک ‏بھنگ کےحوالےسےکوئی پالیسی نہیں، دسمبرتک ملک میں بھنگ کی کاشت کی پالیسی آجائےگی۔