دبئی ایکسپو : ‘پاکستان میں ثقافت ، سیاحت اور سرمایہ کاری کے نئے دور کی شروعات

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

مشیر تجارت رزاق داؤد کا کہنا ہے کہ ایکسپو کے آغاز سے پاکستان میں ثقافت،سیاحت،سرمایہ کاری کے نئے دورکی شروعات ہوگی ، لوگ ایکسپو میں اپنی فیملی، دوستوں کے ساتھ پاکستان پویلین کادورہ کریں۔

تفصیلات کے مطابق مشیرتجارت رزاق داؤد نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ دبئی ایکسپوکے حوالے سے میں پرجوش ہوں، ایکسپو کے آغاز سے پاکستان میں ثقافت،سیاحت،سرمایہ کاری کے نئے دورکی شروعات ہوگی، پاکستان کےپویلین میں پاکستان کےدی ہیڈن ٹریژرتھیم کودنیا میں پیش کریں گے۔

مشیرتجارت کا کہنا تھا کہ ہمیشہ ماناہےپاکستان خوبصورت ملک ہےجسےغلط اندازمیں پیش کیاگیا، ایکسپو2020دنیاکوپاکستان کی حقیقی خوبصورتی کودکھانےکاموقع فراہم کیاگیا، لوگ ایکسپومیں اپنی فیملی،دوستوں کےساتھ پاکستان پویلین کادورہ کریں۔

خیال رہے دنیا کے سب سے بڑے تجارتی میلے دبئی ایکسپو دو ہزار بیس کا شاندار افتتاح ہوگیا، عالمی نمائش میں ایک سو بانوے سے زائد ممالک شریک ہیں، پاکستان کے پویلین کو ’دی ہِڈن ٹریژر ‘ کا نام دیا گیا ہے، پہلے دو دن پاکستان پویلین میں ایڈونچرٹورازم اور بلوچستان انسٹرومینٹل میوزک پرفوکس کیا جائے گا۔

پاکستان پویلین میں موسمیاتی تبدیلی، ہیلتھ اوربزنس ڈیویلپمنٹ کے سیمینار منعقد کئے جائیں گے ، پندرہ اکتوبر کو پاکستان پویلین میں ‘پاکستان بزنس حب’ لانچ کیا جائے گا، جس میں میں وسیم بادامی، اعجازاسلم، عائشہ عمر اور فخرعالم شریک ہوں گے۔

واضح رہے دبئی ایکسپو دو ہزار بیس میں پاکستانی پویلین 3 ہزار 200 مربع میٹر پر محیط ہے، جس کی لاگت 2 کروڑ 14 لاکھ ڈالر ہے، پاکستانی پویلین ایک بڑے ہجوم کی توقع کر رہا ہے جہاں پاکستانی تاریخ ، ثقافت اور روایات پر روشنی ڈالی جائے گی اور تجارت ، سرمایہ کاری اور سیاحت کو فروغ دیا جائے گا۔

جہاں ایکسپو منعقد کی جا رہی ہے اس کا رقبہ 4.38 مربع کلومیٹر ہے اور یہ چھ سو فٹ بال گراؤنڈز کے برابر ہے۔