پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان بحری مشق نسیم البحر 13 کا آغاز

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

پاکستان بحریہ اور رائل سعودی نیول فورسز کے مابین دوطرفہ بحری مشق نسیم البحر 13 کا آغاز ہوگیا ہے۔

ترجمان پاک بحریہ کے مطابق پاکستان بحریہ اور رائل سعودی نیول فورسز کے مابین دوطرفہ بحری مشق نسیم البحر 13 کا آغاز ہوگیا ہے، بحری مشق نسیم البحر پاکستانی اور سعودی بحری افواج کے مابین باقاعدگی سے منعقد کی جاتی ہے۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ مشق میں دونوں بحری افواج کے بحری جہاز، فضائی اثاثے اور رائل سعودی ائیر فورس کے جہاز شرکت کریں گے، مشق میں روائتی اور غیر روائتی خطرات کے خلاف مشترکہ میری ٹائم آپریشنز کا انعقاد کیا جائے گا۔

رجمان پاک بحریہ کے مطابق مشق نسیم البحر دونوں ممالک کی مشترکہ میری ٹائم آپریشنز کی صلاحیت میں اضافے کا باعث بنے گی، مشق کا مقصد دونوں ممالک کے مابین دوطرفہ تعلقات کو مزید فروغ دینا ہے۔

پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان دفاعی تعلقات کی جڑیں گہری ہیں۔

خیال رہے کہ جولائی 2019 میں کراچی میں پاکستان نیول اکیڈمی کی کمیشننگ پریڈ میں 175 گریجویٹس میں تین سعودی بحری افسران شامل تھے۔ اس پریڈ میں رائل سعودی نیول فورسز کے کمانڈر، وائس ایڈمرل فہد بن عبداللہ الغفیلی مہمان خصوصی تھے۔

پاکستانی بحریہ نے 1970 اور 80 کی دہائیوں کے دوران سعودی بحریہ کے ابتدائی برسوں میں مملکت کے افسران اور جہاز رانوں کو تربیت فراہم کی۔

مئی میں پاکستان کے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے مملکت کا دورہ کیا جہاں انہوں نے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان اور دیگر اعلیٰ حکام کے ساتھ باہمی تعلقات سے متعلق بات چیت کی۔

گزشتہ ماہ راولپنڈی میں پاک فوج کے ہیڈ کوارٹر میں سعودی وزیرِخارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان السعود نے جنرل قمر باجوہ کے ساتھ سیکورٹی تعاون کو مضبوط بنانے پر بھی تبادلہ خیال کیا۔

سعودی وزارت خارجہ نے ٹویٹس کی ایک سیریز میں کہا کہ ’انہوں نے دونوں برادر ممالک کے درمیان دوطرفہ تعلقات کا جائزہ لیا اور اس ملاقات میں سکیورٹی اور استحکام کو برقرار رکھنے کے لیے تعاون کو مضبوط بنانے پر غور کیا گیا۔‘