تاریخ میں پہلی مرتبہ پیٹرول 120 روپے کا ہندسہ عبور کر گیا

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

حکومت نے پیٹرول کی قیمت میں وزیراعظم عمران خان کی منظوری کے بعد وزارتِ خزانہ نے ماہِ ستمبر کے آخری پندرہ روز کے لیے پیٹرولیم مصنوعات کی نئی قیمتوں کا نوٹی فکیشن جاری کیا۔

نوٹی فکیشن کے مطابق پیٹرول کی قیمت میں5روپےفی لیٹر اضافہ کیا گیا جبکہ ہائی اسپیڈڈیزل کی قیمت میں5روپےایک پیسہ اور مٹی کے تیل کی قیمت میں 5 روپے 46 پیسے فی لیٹر اضافہ کیا گیا۔

نوٹی فکیشن کے مطابق لائٹ ڈیزل کی قیمت میں5روپے92پیسےفی لیٹر اضافہ کیا گیا۔

نوٹی فکیشن کے مطابق 16 ستمبر کی رات 12 بجے سے پیٹرول کی فی لیٹر قیمت اضافے کے بعد 123 روپے تیس پیسے ہوگی، اسی طرح ہائی اسپیڈ ڈیزل کی قیمت 120 روپے چار پیسے، مٹی کے تیل کی قیمت 92 روپے 26 پیسے اور لائٹ ڈیزل کی فی لیٹر قیمت 90 روپے 69 پیسے ہوگی۔

واضح رہے کہ ایک روز قبل آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی کی جانب سے ماہ ستمبر کے آخری پندرہ روز کے لیے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کی سمری وزارتِ خزانہ کو ارسال کی گئی تھی۔

پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کی سمری وزارت خزانہ کو گزشتہ روز موصول ہوئی تھی، جس میں دس روپے قیمتوں میں اضافے کی تجویز کی گئی تھی۔

اوگرا کی جانب سے ہائی اسپیڈ ڈیزل کی قیمت میں ساڑھے 10 روپے فی لیٹر اضافے کی تجویز دی گئی جبکہ پیٹرول کی قیمت میں ایک روپے فی لیٹر اور مٹی کے تیل کی قیمت میں ساڑھے 5 روپے فی لیٹر اضافے کی تجویز دی گئی تھی۔ قیمتوں میں اضافے کی سمری موجودہ لیوی، جی ایس ٹی کے مطابق تیار کی گئی تھی۔

واضح رہے کہ اوگرا کی جانب سے ہر پندرہ روز کے لیے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کے تعین کے لیے سمر وزارت خزانہ کو ارسال کی جاتی ہے، جس کو وزیراعظم کے سامنے منظوری کے لیے پیش کیا جاتا ہے اور پھر وزارتِ خزانہ نئی قیمتوں کا نوٹی فکیشن جاری کرتا ہے۔

دوسری جانب چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ پیڑول مہنگا کرکے حکومت نے عوام کی جیبوں پر ڈاکا مارا ہے۔

ان خیالات کا اظہار چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاورل بھٹو زرداری نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ہوشربا اضافے پر ردعمل دیتے ہوئے کیا، انہوں نے پیڑولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ مسترد کرتے ہوئے وزیراعظم سے سوال کیا کہ خان صاحب قوم کے اچھے دن کب آئیں گے۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ پیڑول مہنگا کرکے عمران خان نے عوام کی جیبوں پر ڈاکا مارا ہے، ڈالر اور پیڑول ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر ہوں گے تو ہر شے مہنگی ہوگی۔

پی پی پی رہنما نے عمران خان سے متعلق کہا کہ عمران خان نے کہا تھا کہ ’میں رلاؤں گا‘ آج پوری قوم رو رہی ہے اور خان صاحب چین کی بانسری بجا رہے ہیں۔

بلاول نے سوال کیا کہ بجٹ کے بعد عوام کو ریلیف پہنچانے کے وہ بڑے دعوے کہاں گئے؟

چیئرمین پیپلز پارٹی نے وفاقی وزراء کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ جھوٹ بول کر اقتدار میں آنے والے مہنگا پیٹرول بیچ کر اسکا دفاع کررہے ہیں۔

انہوں نے دعویٰ کیا کہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے سے جمع اربوں روپے حکومت کرپشن میں اڑا دے گی۔