ادویات کی قیمتوں میں اضافے پر پشاور ہائیکورٹ کا اظہار تشویش

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

پشاور ہائی کورٹ نے ادویات کی قیمتوں میں اضافے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے وفاقی سیکرٹری ہیلتھ کو طلب کرلیا۔

پشاور ہائی کورٹ میں ادویات کی قیمتوں میں اضافے کے حوالے سے چیف جسٹس قیصر رشید خان نے کیس کی سماعت کی۔

دوران سماعت چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ نے ریمارکس دیے کہ مہنگائی کی وجہ سے عوام ادویات خریدنے سے قاصر ہیں، مختلف کمپنیوں کی اجاراداری کی وجہ سے عوام ادویات بھی نہیں خرید سکتے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ چار سال ہوگئے حکومت نے ادویات کی قیمتوں سے متعلق کوئی پالیسی نہیں بنائی، ادویات اور لیبارٹریز کے ٹیسٹوں سے متعلق ایک طریقہ کار واضح ہونا چاہیے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ حکومت اگر اقدامات کرے تو باہر سے درآمد کی جانے والی ادویات یہاں تیار کی جاسکتی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ادویات کی قیمتوں میں اضافہ عوامی مسئلہ ہے، حکومت کو اس کو سنجیدہ لینا چاہیئے تھا لیکن بدقسمتی سے حکومت اس معاملے میں سنجیدگی ظاہر نہیں کررہی۔

عدالت نے وفاقی سیکرٹری ہیلتھ کو آئندہ سماعت پر طلبی کے نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت 23 ستمبر تک ملتوی کردی۔