ڈالر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

امریکی ڈالر نے ملک میں تمام پچھلے ریکارڈز توڑ ڈالے اور تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا۔

منگل کو زرمبادلہ کی دونوں مارکیٹوں انٹربینک اور اوپن مارکیٹ میں روپے کی بے قدری کا سلسلہ مسلسل جاری رہا۔

انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر 90 پیسے کے اضافے سے 168.99 روپے کا ہوگیا۔ یہ تاریخ کی بلند ترین سطح ہے۔

آخری بار اگست 2020ء میں ڈالر 168.42 روپے کی سطح پر ٹریڈ ہوا تھا۔

سمندر پار مقیم پاکستانیوں کی جانب سے ترسیلات زر کی آمد کا حجم 10 سال کی بلند سطح پر پہنچنے کے باوجود روپیہ مسلسل عدم استحکام کا شکار ہے۔

بیرونی ادائیگیوں، بڑھتی ہوئی درآمدات نے روپیہ کو کمزور رکھا جبکہ معاشی مستقبل کے بارے میں غیر یقینی صورتحال سے بھی ڈالر کی طلب میں اضافہ ہو رہا ہے۔

ملکی ریکارڈ درآمدات، تاریخ ساز کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ بھی روپیہ کی قدر پر اثر انداز ہو رہا ہے۔

واضح رہے کہ گذشتہ روز انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر کی قدر 7 پیسے کے اضافے سے 168.09 روپے جبکہ اوپن کرنسی مارکیٹ میں ڈالر کی قدر 30 پیسے کے اضافے سے 169 روپے کی سطح پر بند ہوئی تھی۔