طالبان حکومت کو کب تسلیم کرنا ہے یہ فیصلہ وزیراعظم کریں گے : وزیر داخلہ

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ پنج شیر سے متعلق بھارتی میڈیا جھوٹا پروپیگنڈا کر رہا ہے، پاک فوج کسی چیز میں ملوث نہیں، افغانستان کی نئی حکومت کو تسلیم کرنے کے وقت کا فیصلہ وزیراعظم عمران خان کو کرنا ہے۔

پی ٹی آئی کے سینیٹر فیصل واوڈا کی رہائش گاہ پر ان کی والدہ کی وفات پر تعزیت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شیخ رشید نے کہا کہ حکومت، پاک فوج، ایف آئی اے اور امیگریشن نے مل کر افغانستان سے ہزاروں افراد کا کامیابی سے انخلا کروایا.

انہوں نے کہا کہ کوشش ہے خطے میں امن ہو، ہمارا بیانیہ بھی امن ہی ہے، خطے میں امن ہوگا تو دنیا میں بہتر پیغام جائے گا۔

شیخ رشید احمد نے کہا کہ پاکستان اور عمران خان کا کردار بہت اہم ہونے جارہا ہے، دنیا جانتی ہے اس خطے کا امن ساری دنیا کے امن سے وابستہ ہے.

انہوں نے کہا کہ آج 40 سال بعد افغانستان میں امن کی فضا قائم ہوئی ہے، امن کے لیے 18 ماہ مذاکرات ہوئے جس کی صورت میں امریکا 31 اگست کی رات افغانستان سے چلا گیا۔

وزیر داخلہ نے کہا کہ اب اگر امریکا نے اکاؤنٹ منجمد کیا تو اس اقدام سے انسانی بحران جنم لے سکتا ہے، امید ہے کہ موجودہ حالات میں امریکا افغانستان کے لیے امداد دے گا،

پاکستان کے دو امدادی جہاز پہنچ چلے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ افغانستان کی نئی حکومت تسلیم کرنے یا نہ کرنے اور کب کرنے کا فیصلہ وزیراعظم عمران خان کو کرنا ہے، دنیا کے چلنے اور انداز اختیار کرنے کا فیصلہ بھی عمران خان کا ہی ہوگا۔

وزیر داخلہ نے پنج شیر کے حوالے سے کیے جانے والے بھارتی میڈیا کے پروپیگنڈے کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ پنج شیر سے متعلق بھارتی میڈیا جھوٹا پروپیگنڈا کر رہا ہے، پاک فوج کسی چیز میں ملوث نہیں، طالبان جانے اور افغانستان جانے۔

شیخ رشید احمد نے بتایا کہ دو خواتین سمیت تین لوگوں کو طور خم کے ذریعے افغانستان جانے کی اجازت دی، جن میں سے دو خواتین واپس آچکی جبکہ ایک ایمبولینس جالندھر میں خراب ہے، سرحد سے علاج کے لیے بھیجنے کا فیصلہ وزارت داخلہ نے انسانی ہمدردی کی بنیادوں پر کیا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان اور عمران خان کی حکومت مزید ترقی کرے گی، چیف الیکشن کمیشن کے حوالے سے آج اتوار کو پریس کانفرنس میں اہم باتیں کروں گا۔