بارودی سرنگوں سے معذور قبائلی افراد کو مصنوعی اعضا لگا دیے گئے

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

پاک آرمی کے تعاون سے ’چل فاؤنڈیشن‘ نے قبائلی اضلاع کے مختلف علاقوں میں بارودی سرنگوں کی وجہ سے معذور ہونے والے 22 افراد کو مصنوعی اعضاء لگا دیے۔

مصنوعی اعضاء پانے والوں میں حبیب اللہ، محمد الیاس، نور اسلم، عمر فاروق، آشما،خان محمد، زبیرخان، قذافی، عبدالرحمان، زلیخا، سرد نور، اجمل خان، محمد ہاشم، سعیداللہ، سید محمد، بلشہ نازہ، عامر خان، محمد ولی، معلوک خان، بخت میر، نیب اللہ اور سقیب رحمان شامل ہیں جن کا تعلق شمال وزیرستان، جنوبی وزیرستان اور کرم کے اضلاع سے ہے۔

چل فاؤنڈیشن پاکستان آرمی کے تعاون سے باقی قبائلی اضلاع میں بھی متاثرہ لوگوں کو فری علاج مہیا کر ے گی، ان زخمیوں کو رہائش، ٹریننگ اور دو عدد مددگار فری فراہم کیے جا رہے ہیں۔

یاد رہے کہ دہشت گردوں نے فوجی آپریشن سے پہلے علاقہ چھو ڑتے وقت بہت زیادہ بارودی سرنگیں تمام قبائلی اضلاع میں بچھائی تھیں اور اس وقت پاک فوج کی 100 کے قریب ٹیمیں تمام قبائلی علاقوں میں تعینات ہیں جو کہ ان بارودی سرنگوں کی صفائی کا کام کر رہی ہیں۔