خیبر پختونخوا : الیکشن کمیشن نے بلدیاتی انتخابات 3 مراحل میں کرانے کی تجویز

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

الیکشن کمیشن نے خیبر پختونخوا میں بلدیاتی انتخابات دو سے تین مرحلوں میں کرانے کی تجویز دیدی ہے جبکہ انتخابات دو مرحلے کی تجویز کے تحت میدانی علاقوں میں دسمبر اور مارچ تک پہاڑی علاقوں میں انتخابات کرانے پر غور کیا جارہا ہے۔

خیبر پختونخوا میں بلدیاتی اداروں کے خاتمے کے بعد بلدیاتی انتخابات کرانے کی آئینی مدت ختم ہونے کے بعد بھی انتخابات کرانے کا فیصلہ نہ ہوسکا، الیکشن کمیشن نے 31 اگست تک خیبر پختونخوا حکومت کو بلدیاتی انتخابات کرانے کی تاریخ مانگی ہے جبکہ صوبائی حکومت نے معاملہ کابینہ سے مشاورت کا وقت مانگا ہے۔

الیکشن کمیشن ذرائع کے مطابق خیبر پختونخوا حکومت کو ایک یا دو مرحلوں کی بجائے تین مرحلوں میں بلدیاتی انتخابات کرانے کی تجویز دی گئی ہے.

الیکشن کمیشن کا موقف ہے کہ بیک وقت پورے صوبے میں انتخابات کرانے کے لیے اتنے وسائل نہیں اور نہ ہی پولنگ عملے کی ضرورت پوری کی جاسکتی ہے، اس لیے انتخابات دو یا تین مرحلوں میں کرانے کی تجویز دی گئی ہے۔

خیبر پختونخوا حکومت اگلے سال بلدیاتی انتخابات کرانے کی خواہشمند ہے جبکہ الیکشن کمیشن کا موقف ہے کہ آئینی مدت گزرنے کے بعد بلدیاتی انتخابات میں مزید تاخیر نہ کی جائے۔

ذرائع کے مطابق الیکشن کمیشن اور صوبائی حکومت کے درمیان بلدیاتی انتخابات دسمبر میں کرائے جانے پر اتفاق ہونے کا امکان ہے۔

حکومتی ذرائع کے مطابق پہلے مرحلے میں میدانی علاقوں اور دوسرے مرحلے میں پہاڑی علاقوں میں بلدیاتی انتخابات کرائے جانے کی تجویز زیر غور ہیں تاہم حتمی فیصلہ خیبر پختونخوا کابینہ کے فیصلے کے بعد کیا جائے گا۔