اسٹیٹ بینک : سمندر پار پاکستانیوں کیلئے ’روشن اپنا گھر اسکیم‘ شروع کریگا

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

مرکزی بینک دولت پاکستان سمندر پار پاکستانیوں کیلئے نئی روشن اپنا گھر اسکیم اِس ہفتے شروع کرے گا، جس کے تحت وہ پاکستان میں اپنی املاک خرید سکیں گے۔

غیر مقیم پاکستانی روشن ڈیجیٹل اکاؤنٹ کے ذریعے اب پاکستان میں مکان خرید سکتے ہیں یا مکان کیلئے قرضہ حاصل کر سکتے ہیں۔ روشن ڈیجیٹل اکاؤنٹ اسٹیٹ بینک کا ایک بڑا اقدام ہے، جو پاکستان میں کام کرنے والے کمرشل بینکوں کے اشتراک سے 10 ستمبر 2020ء کو شروع کیا گیا تھا۔

سٹیٹ بینک کے مطابق یہ اکاؤنٹس پاکستان میں بینکاری، ادائیگی اور سرمایہ کاری کی سرگرمیاں انجام دینے کے خواہاں لاکھوں غیر مقیم پاکستانیوں کو بینکاری کے اختراعی راستے فراہم کرتے ہیں.

انہوں نے کہا کہ ان اقدامات کے تحت سمندر پار پاکستانیوں کو کئی مالی مصنوعات فراہم کی گئی ہیں، جن میں سرمایہ کاری کیلئے نیا پاکستان سرٹیفکیٹ کار کے قرضے کیلئے روشن اپنی کار اور فلاحی اداروں کو عطیات کیلئے روشن سماجی خدمات شامل ہیں۔

روشن اپنا گھر بھی اسی سلسلے کی نئی طرز کی بینکنگ پراڈکٹ ہے، غیر مقیم پاکستانی اب بیرونِ ملک بیٹھے بیٹھے اور کسی بینک کی برانچ میں جائے بغیر مکان خرید سکتے ہیں یا مکان کیلئے آسانی سے قرضہ حاصل کر سکتے ہیں.

انہوں نے کہا کہ وہ بینک کے پہلے سے منظور شدہ منصوبوں میں سے مکان خرید سکتے ہیں یا پھر قرضہ حاصل کر سکتے ہیں یا کوئی بھی جائیداد لے سکتے ہیں۔

ٹیکس نظام سادہ اور حتمی ہے۔ جائیداد کی فروخت کی صورت میں، سرمائے کے طور پر لگائی ہوئی اصل رقم کسی اجازت کے بغیر بیرونِ ملک منگوائی جا سکتی ہے، شرحِ منافع پُرکشش ہے۔ قرضہ روایتی اور شریعت سے ہم آہنگ طریقوں دونوں میں دستیاب ہے۔