ایس او پیز پر عملدرآمد پر علماء کا شکر گزار ہوں، عمران خان

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

 عوام کے سوالات کے براہ راست جواب دیتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ اس وقت پاکستان میں کورونا کی چوتھی لہر آئی ہوئی ہے

کورونا وائرس کی بھارتی قسم سب سے زیادہ خطرناک ہے، یہ بہت تیزی سے پھیلتی ہے، ہم نے درست فیصلے کرکے اپنی معیشت اور عوام کو بچایا، ماسک کے استعمال سے کورونا وائرس پھیلنے شرح کم ہو جاتی ہے.

انہوں نے کہا کہ لاک ڈاوَن لگانا ہے تو ہمیں دوسری طرف بھی دیکھنا ہے، لاک ڈاوَن کے باعث لوگ بھوکے ہوں گے، اگر لاک ڈاوَن ہو تو دیہاڑی دار اور مزدور طبقہ کہاں جائے گا، اللہ تعالیٰ کا شکر ہے کہ ہماری معیشت اوپر جا رہی ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ ہم نے کسی صورت لاک ڈاوَن کرکے اپنی معیشت کو تباہ نہیں کرنا، جب تک بچوں اور اساتذہ کی ویکسی نیشن نہ ہو، اسکول نہ کھولے جائیں۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ملک کورونا وائرس کی چوتھی لہر کا سامنا کر رہا ہے، ایسے حالات میں علماء کرام کا شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں، جنہوں نے مساجد میں ایس او پیز پر عملدرآمد کو یقینی بنایا۔

عوام سے براہ راست گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بھارت سے آنے والا ڈیلٹا ویرینٹ سب سے زیادہ خطرناک ہے اور خطرے کو کم از کم ماسک کے ذریعے کم کیا جا سکتا ہے۔

انہوں نے ماسک پہننے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ عوامی مقامات پر جانے سے قبل ماسک پہنیں، کیونکہ اس سے 70 فیصد امکان ہوتا ہے کہ آپ وائرس سے متاثر نہ ہوں