خیبر پختونخوا : سرکاری صحت مراکز کیلئے نئی گائیڈ لائنز جاری

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

محکمہ صحت خیبر پختونخوا نے صوبے میں موسمی اثرات اور نقصانات سے بچاؤ کے لئے پرائمری ہیلتھ کیئر مراکز کے لئے نئی گائیڈ لائنز جاری کر دیں ہیں۔

محکمہ صحت خیبر پختونخوا کے مطابق نئے اور دوبارہ بحال کئے جانے والے مراکز صحت کی عمارتیں ان گائیڈ لائنز کے مطابق بنائی جائیں گی جو آب و ہوا اور موسمی اثرات کے مقابلے میں لچکدار ہوں گی تاکہ کسی ممکنہ نقصان سے بچا جاسکے۔

محکمہ صحت کے اعلامیہ کے مطابق سول ڈسپنسریاں آسانی سے قابل رسائی مقامات پر بنائی جائیں گی، جس میں طبی فضلے کی تلفی، متبادل بجلی کا نظام، نمایاں داخلی دروازہ، رجسٹریشن وریکارڈ روم، ادویات کی جگہ، مریضوں کی انتظار گاہ، خدمات کی فہرست بمعہ اخراجات، آپریشن کے دوران مرد وخواتین کے لئے الگ الگ انتظامات، ٹوائلٹ، معائنہ روم، صاف پانی، ڈریسنگ، انجکشن، ویکسینیشن روم، سٹوریج، ٹیلی فون کی سہولیات دستیاب ہوں گی۔

نئی گائیڈ لائنز کے مطابق بنیادی مرکز صحت پر مقامی زبانوں میں نام لکھا جائے گا، سہولیات کا نام مقامی زبانوں میں لکھا جائے گا، چار دیواری لازمی ہوگی، فیسوں کی فہرست نمایاں آویزاں کی جائے گی، پانی، ٹوائلٹ، معائنہ روم انتظار گاہ اور بیٹھنے کے انتظامات لازمی ہوں گے۔

دیہی مراکز صحت میں علیحدہ علیحدہ معائنہ روم ہوں گے مریضوں کی راز داری کا بندوبست کیا جائے گا، آر ایچ سیز میں مرد و خواتین کے لئے پانچ پانچ بستروں پر مشتمل وارڈز ہوں گے.

گائیڈ لائنز کے مطابق صفائی ہمہ وقت یقینی بنانا ہوگی، وارڈز میں داخل مریضوں ک لئے کھانا پکانے کی اجازت نہیں ہوگی، آپریشن تھیٹر، لیبر روم، ڈریسنگ، انجکشن روم لیبارٹری، جنرل اسٹور، ویکسین سٹوریج اور حفاظتی ٹیکہ جات کی سہولت، لانڈری، رہائش، پانی، بجلی ٹیلی فون، یوٹیلیٹی روم سمیت تمام بنیادی سہولیات کی فراہمی یقینی بنانا ہو گی۔