فاٹا انضمام کے بعد امیر و غریب کو یکساں انصاف مل رہا ہے، کرم بار ایسوسی ایشن

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

کرم بار ایسوسی ایشن کے صدر افتخار علی نے کہا ہے کہ فاٹا انضمام کے بعد قبائلی اضلاع میں عدالتی نظام سے امیر و غریب کو یکساں انصاف مل رہا ہے اور غریب افراد کے کیسز فری حل کئے جارہے ہیں۔

پاراچنار پریس کلب میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کرم بار ایسوسی ایشن کے صدر افتخار علی، سیکرٹری جنرل سید فدا حسین اور عامر عباس طوری ایڈووکیٹ نے کہا کہ قبائلی اضلاع میں عدالتی نظام کے ذریعے کیسز تیزی سے حل ہورہے ہیں اور غریب و امیر کو بلاتفریق انصاف مل رہا ہے،

وکلا کا کہنا تھا کہ ایف سی آر دور کے مراعات یافتہ لوگ ان کیلئے مختلف قسم مسائل پیدا کررہے ہیں تاہم عوام عدالتی نظام سے مطمئن ہیں کیونکہ عدالتی نظام میں چیک اینڈ بیلنس سے کام لیا جاتا ہے اور ہر پہلو سے انصاف کے تقاضے پورے کرنے کے بعد فیصلے صادر کئے جاتے ہیں جبکہ ایف سی آر میں وکیل دلیل اور اپیل کا حق نہیں تھا۔

وکلا کا کہنا تھا کہ عدالتی نظام کے نفاذ کے بعد تاحال وکلا بھی مختلف قسم کے مسائل کا شکار ہیں، بار روم جو وکلا کا گھر کہا جاتا ہے تا حال فرنیچر اور دیگر سہولیات سے محروم ہے۔

اسی طرح لائبریری نہ ہونے کے باعث بھی انہیں دشواری کا سامنا ہے۔ وکلا کا کہنا تھا کہ مقامی وکلا دس سے تیس ہزار تک مختلف کیسز کی فیس وصول کرتے ہیں اور یو این ڈی پی کے تعاون سے غریب کلائنٹس کے کیسز فری میں حل کئے جاتے ہیں۔