پاکستان – ازبکستان : صحت، زراعت اور فلم میکنگ میں تعاون کا اعلان

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

وزیراعظم دو روزہ عمران خان ازبکستان پہنچ گئے جہاں دونوں ممالک نے باہمی تجارت کو فروغ دینے سمیت، زراعت، صحت اور فلم میکنگ کے شعبوں میں مشترکہ کاوشوں کا اعلان کیا جبکہ پاکستان ازبکستان میں کرکٹ متعارف کرانے میں بھی مدد کرے گا۔

اس بات کا اعلان وزیراعظم عمران خان اور ازبک صدر نے تاشقند میں مشترکہ نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ وزیراعظم کے ہمراہ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، وزیر تجارت عبدالرزاق داؤد سمیت دیگر اعلیٰ حکام اور تاجروں کا ایک بڑا وفد بھی ازبکستان پہنچا۔ وزیراعظم کا بھرپور استقبال کیا گیا۔

بعد ازاں کئی اہم معاہدوں اور ایم او یوز پر بھی دستخط کیے گئے۔

نیوز کانفرنس میں وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ آپ نیا ازبکستان اور ہم نیا پاکستان بنانا چاہتے ہیں، پاکستان اور ازبکستان معاشی ترقی کے ایک ہی سفر پر گامزن ہیں، ہم پاکستان کو ایک فلاحی ریاست بنانے کے لیے کوشاں ہیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ ہم ازبکستان کے ساتھ مضبوط تجارتی تعلقات کے خواہاں ہیں جس کے لیے پاکستانی تاجروں کا ایک بڑا وفد میرے ساتھ آج یہاں تاشقند آیا ہے.

پاکستان کے تاجر ازبکستان میں کام کرنے کے خواہش مند ہیں، ہم صحت، تجارت اور زراعت کے شعبہ جات میں ایک دوسرے کے درمیان تعاون کو فروغ دیں گے۔

انہوں ںے کہا کہ دونوں ممالک کو غربت جیسے مسائل کا سامنا ہے ہمارے اہداف مشترکہ ہیں اور دونوں کو غربت کا خاتمہ کرنا ہے اور ہم دونوں کو مل کر ایک دوسرے کے عوام کو غربت سے نکالنا ہوگا۔

وزیراعظم نے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان ثقافتی تعلقات کو فروغ دیں گے، ہماری نئی نسل کو اپنے قدیم ہیروز کے بارے میں معلوم ہونا چاہیے، دونوں ممالک مشترکہ طور پر مغل بادشاہ ظہیر الدین بابر، صوفی بزرگوں اور شاعر مشرق علامہ اقبال کی زندگی پر بھی فلم بنائیں گے۔

عمران خان نے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان ثقافتی تعلقات مضبوط ہونے کے بعد ازبکستان میں کرکٹ متعارف کرائیں، خوشی ہوگی کہ پاکستان کرکٹ کے شعبے میں ازبکستان کی مدد کرے۔

افغانستان کے معاملے پر انہوں نے کہا وہاں سول وار کا خدشہ ہے ہم اس مسئلے کو پرامن طور پر حل کرنا چاہتے ہیں، ہم افغان مسئلے کے سیاسی حل کے لیے کردار ادا کرتے رہیں گے، افغان ہمارے بھائی ہیں ان کی مدد کرنا چاہتے ہیں، چاہتے ہیں افغانستان میں جلد از جلد امن قائم ہو جائے۔