پشاور : دلیپ کمار کے رشتہ دار بھی ان کی وفات پر رنجیدہ

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

فرزند پشاور شہنشاہ جذبات یوسف خان عرف دلیپ کمار کروڑوں مداحوں کو افسردہ چھوڑ گئے۔

دلیپ کمار کے پشاور میں رہنے والے رشتہ دار بھی ان کی وفات پر رنجیدہ ہیں کہتے ہیں کہ دلیپ کمار تو ان کے درمیان نہیں رہے تاہم حکومتی فیصلے کے تحت ان کے گھر کو قومی ورثہ قرار دینے سے دلیپ کمار کی یادیں ہمیشہ زندہ رہیں گی۔

دلیپ کمار 1922 میں محلہ خداداد میں پیدا ہوئے۔ دلیپ کمار کے آبائی شہر پشاور میں انکے کئی رشتہ دار مقیم ہیں جن میں انکے بھتیجے فواد اسحاق بھی شامل ہیں۔

فواد اسحاق کہتے ہیں کہ مرحوم دلیپ کمار جب پشاور آئے تو ان کے گھر قیام کیا۔دلیپ کمار کو پشاور سے خاص لگاؤ تھا۔

دلیپ کمار کے قریبی رشتہ دار آفان عزیز نے ان کی وفات پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مرحوم شائستہ اور نفیس طبعیت کے مالک تھے۔ دلیپ کمار کو اپنی مادری زبان ہندکو سے بہت لگاؤ تھا۔

دلیپ کمار کے رشتہ داروں نے خیبرپختونخوا حکومت کی جانب سے مرحوم کے آبائی گھر کو میوزیم بنانے کے فیصلہ کو سراہتے ہوئے کہا کہ عجائب گھر بننے سے دلیپ کمار کی یادیں آنے والی نسلوں تک محفوظ رہیں گی۔

دلیپ کمار کے نام سے مشہور یوسف خان اپنے اہل خانہ کے ساتھ1935 میں کاروبار کے سلسلے میں ممبئی منتقل ہوئے اور 1988 میں دلیپ کمار نے پشاور میں اپنےآبائی گھر کا دورہ کیا تھا۔

تاریخی قصہ خوانی بازار سے متصل محلہ خداداد آباد کی گلیوں میں آج بھی دلیپ کمار کو یوسف خان سے یاد کیا جاتا ہے۔

اپنے ایک بیان میں دلیپ کمار کا کہنا تھا کہ میں پشاور کی گلیوں میں گھومتا پھرتا تھا اس کے بعد ممبئی گیا اور پھر وہیں سکونت اختیار کی لیکن میری یاد میں پشاور کے نقشے کھنچے ہوئے تھے۔

بتایا جاتا ہے کہ دلیپ کمار کو پشاور کا قہوہ بہت پسند تھا جب کہ ان کے چاہنے والوں کا ماننا ہے کہ دلیپ کمار کا فن ہمیشہ ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔