کرم: یوسف خیل قبائل کی چارکندی قبائل کیخلاف پریس کانفرنس

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

ضلع کرم کے زیڑان یوسف خیل قبائل کا کہنا ہے کہ علاقہ کے چارکندی قبائل نے انہیں اپنے قبرستان میں دفنانے کی اجازت نہیں دی، جس کی وجہ سے صوبائی اسسٹنٹ ڈائریکٹر پاپولیشن (ر) مختیار علی کی میت کو مجبوراً دوسرے قبرستان میں دفنا دیا گیا۔

زیڑان یوسف خیل قبائل کے رہنماؤں ملک نثار حسین، پرنسپل احمد علی، منظور حسین، اقبال حسین، مظاہر علی، جابر بنگش، دلدار حسین اور دیگر رہنماؤں نے کہا کہ زیڑان کے چارکندی قبائل انہیں اپنے ہی قبرستان میں میت دفنانے کی اجازت نہیں دے رہے ہیں اور آج قبرستان میں میت دفنانے کیلئے پورا دن انتظار کے باوجود جب اجازت نہ دی گئی تو مجبوراً ہم نے اسسٹنٹ ڈائریکٹر پاپولیشن (ر) مختیار علی کو دوسرے قبرستان میں دفنا دیا۔

رہنماؤں کا کہنا تھا کہ پولیس نے یقین دہانی کرائی ہے کہ میت دفنانے کی اجازت نہ دینے کی صورت میں مخالف فریق کے خلاف پرچہ کاٹا جائے گا، مگر اپنے ہی قبرستان میں میت دفنانے کے انکار کے باوجود پولیس نے حسب وعدہ پرچہ نہیں کاٹا۔

رہنماؤں کا کہنا تھا کہ گذشتہ ایک سال کے دوران چھ میتوں کو دفنانے کے موقع پر اس قسم کی صورت حال کا سامنا کرنا پڑا اور پشاور ہائی کورٹ کے واضح فیصلے کے باوجود وہ اپنے ہی قبرستان میں میتیں نہیں دفنا سکتے۔

رہنماؤں نے وزیر اعلیٰ اور چیف سیکرٹری سمیت ذمہ دار حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ مسئلے کے حل کیلئے اقدامات اٹھائیں۔