سپورٹس بجٹ میں دو سو فیصد اضافہ، 6.3 بلین روپے مختص

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

خیبر پختونخوا حکومت نے 2021-2022 کے سالانہ بجٹ میں کھیلوں کیلئے گزشتہ سال کی نسبت اس سال کے بجٹ میں 200 فیصد اضافے کا اعلان کیا ہے۔

گزشتہ سال کھیلوں کا سالانہ بجٹ 2.1 بلین روپے کا تھا جو 100 فیصد استعمال کیا گیا جبکہ اس سال کے بجٹ میں کھیلوں کے فروغ و ترقی اور انفراسٹرکچر سمیت دیگر معاملات کے لئے 6.3 بلین روپے مختص کئے گئے ہیں جس میں اے آئی پی میں ضم شدہ اضلاع کیلئے 2.7 بلین روپے جبکہ اے ڈی پی میں 700 ملین روپے مختص کئے گئے ہیں۔

جن منصوبوں کے لئے رقوم مختص کی گئی ہیں ان میں ایبٹ آباد میں بین الاقوامی معیار کے جمنازیم کیلئے 204 ملین روپے، خیبر پختونخوا میں پلے گراؤنڈز کیلئے 4.225 ملین روپے، رستم ضلع مردان میں سپورٹس کمپلیکس کی تعمیر کیلئے 241.492 ملین روپے، خیبر پختونخوا میں کھیلوں کی سہولتوں کی بحالی و تزئین و آرائش کیلئے 850 ملین روپے.

ضلع نوشہرہ میں بین الاقوامی معیار کے انڈور جمنازیم کی تعمیر، پشاور کے ارباب نیاز کرکٹ سٹیڈیم کے تعمیراتی منصوبے کو مکمل کرنے کیلئے 1.946 ملین روپے، سوات میں سپورٹس کمپلیکس کی تعمیر کیلئے 582 ملین روپے، ڈی آئی خان، کوہاٹ، چارسدہ اور اسلامیہ کالج پشاور میں ہاکی آسٹروٹرف کے لئے 625 ملین روپے مختص ہوے .

کوہاٹ، ڈی آئی خان اور بنوں میں ایتھلیٹکس ٹریک کیلئے 358 ملین روپے، پشاور سپورٹس کمپلیکس کے فٹبال گراؤنڈ کی اپ گریڈیشن کیلئے 386 ملین روپے، حیات آباد سپورٹس کمپلیکس میں سوئمنگ پول کی تعمیر کیلئے 88 ملین روپے، ڈی آئی خان، بنوں، ہری پور اور مردان میں سپورٹس کمپلیکس کی تزئین و آرائش و اپ گریڈیشن کیلئے 700 ملین روپے، ایک ہزار کھیلوں کی سہولیات پراجیکٹ کیلئے 5500 ملین روپے ہیں.

خیبر پختونخوا میں کھیلوں کی سرگرمیوں کے لئے 370 ملین روپے، کھیلوں کے فروغ و ترقی کیلئے اصلاحات اور اس پر عملدرآمد کیلئے 68 ملپن روپے، سوات میں ہاکی آسٹروٹرف کیلئے 99 ملپن روپے جبکہ 700 ملین روپے کی لاگت سے خیبر پختونخوا میں خواتین کے انڈور کھیلوں کی سہولتوں کی فراہمی شامل ہے۔

اس کے علاوہ خیبر پختونخوا میں سکواش کے فروغ و ترقی کیلئے 250 ملین روپے، ٹیلنٹڈ کھلاڑیوں کیلئے سپورٹس پروگراموں کیلئے 200 ملپن روپے، 2 سپورٹس سٹیڈیمز کی تعمیر کیلئے 450 ملین روپے، پشاور سپورٹس کمپلیکس کی اپ گریڈیشن کیلئے 500 ملین روپے، کرکٹ میں سپورٹس کمپلیکس کے قیام کیلئے 449 ملپن روپے مقرر ہوے.

سپورٹس سٹی کے قیام کیلئے 20 ملین روپے، بونیر میں بین الاقوامی معیار کے انڈور جمنازیم کیلئے 286 ملین روپے، حیات آباد سپورٹس کمپلیکس کی اپ گریڈیشن کیلئے 500 ملین روپے، ضلع کرک میں سپورٹس کمپلیکس کی تعمیر کیلئے 500 ملین روپے، ٹانک میں سپورٹس کمپلیکس کی تعمیر کیلئے 219 ملین روپے، خیبر پختونخوا میں سپورٹس ٹیلنٹ کی گرومنگ کیلئے 233 ملین روپے، سوات گراسی گراؤنڈ کی بحالی و بہتری کیلئے 452 ملین روپے.

روپورٹ کی مطابق تہکال پشاور میں سپورٹس سٹیڈیم کی فزیبلٹی سٹڈی کیلئے 502 ملپن روپے، ضلع سوات، کالام میں کرک سٹیڈیم اور دیگر سہولتوں کی تعمیر کیلئے 2467 ملین روپے، لکی مروت میں سپورٹس کمپلیکس کی تعمیر کیلئے 263 ملین روپے، خیبر پختونخوا میں سپورٹس ایکوپمنٹ کی فراہمی کیلئے 500 ملین روپے، ضلع نوشہرہ کی یونین کونسل پیر سباق’پہاڑی کٹی خیل اور جہانگیرہ میں سپورٹس کمپلیکس کی تعمیر کیلئے 300 ملین روپے.

اس کے علاوہ ضلع چترال میں سپورٹس کمپلیکس کی تعمیر کیلئے 100 ملین روپے جبکہ خیبر پختونخوا میں یونین کونسل کی سطح پر پلے گراؤنڈز کی تعمیر کیلئے 3000 ملین روپے مختص کئے گئے ہیں۔