خیبر پختونخوا : صحت کارڈ کے تحت لیور ٹرانسپلانٹ کے علاج کی منظوری

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

خیبر پختونخوا کابینہ نے صحت کارڈ کے تحت لیور ٹرانسپلانٹ کے علاج سمیت کئی فیصلوں کی منظوری دے دی۔

معاون خصوصی اطلاعات و اعلیٰ تعلیم کامران بنگش نے صوبائی کابینہ اجلاس کے بعد میڈیا بریفنگ میں کہا کہ کابینہ نے صحت کارڈ کے تحت لیور ٹرانسپلانٹ کے علاج کی سہولت کی منظوری دے دی، اس کے بعد بون میرو ٹرانسپلانٹ کے علاج کو بھی صحت کارڈ کے تحت مفت کیا جائیگا۔

کامران بنگش نے مزید کہا کہ کابینہ نے ڈبلیو ایس ایس سی بنوں اور ڈبلیو ای ایس سی سوات کے چیف ایگزیکیٹو کے لیے توقیر حسین شاہ اور شیدا محمد شاہ کی منظوری دے دی.

انہوں نے کہا کہ واٹر اینڈ سینٹی سروسز پشاور کے بورڈ ممبران کی تعیناتی کے لئے وزیر بلدیات اکبر ایوب خان کی سربراہی میں کمیٹی بنائی گئی، جس میں وزیر صحت تیمور جھگڑا، وزیر جنگلات اشتیا ق ارمڑ اور معان خصوصی اطلاعات و اعلیٰ تعلیم کامران بنگش شامل ہوں گے۔

معاون خصوصی نے کہا کہ کابینہ اجلاس میں پناہ گاہ رولز 2020 کی بھی منظوری دی گئی، رولز کے تحت پناہ گاہوں میں مقیم افراد کو صحت سہولیات، سیکیورٹی، مدت قیام، بچوں کے ساتھ والدین یاسرپرست کی موجودگی جیسے امور کے لیے طریقہ کار واضع ہے۔

کامران بنگش نے کہا کہ صوبائی کابینہ نے فیصلہ کیا کہ 2500 ایکس سروس مین کے کنٹریکٹ ملازمین super innovation period تک خیبر پختونخوا کے ملازم رہیں گے.

خیبر پختونخوا حکومت صوبے سے ممنوعہ بور کے اسلحے کا خاتمہ چاہتی ہے، اس سلسلے میں وزیراعلیٰ محمود خان نے وزیر خوراک کی سربراہی میں کمیٹی تشکیل دی۔

انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا کابینہ میں محکمہ اعلیٰ تعلیم نے نوشہرہ میں ائیر یونیورسٹی کے لئے 225 کنال اراضی پاکستان ائیر فورس کو دینے پر رضامند ظاہر کردی، ائیر یونیورسٹی ایک اسٹیٹ آف آرٹ انسٹیٹیوشن ہوگا۔