پشاور: لیڈی ریڈنگ اسپتال کی او پی ڈیز دوبارہ بحال

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

کورونا کیسز میں کمی آنے پر لیڈی ریڈنگ اسپتال پشاور کی او پی ڈیز تین ماہ بعد دوبارہ مریضوں کے لئے باضابطہ کھول دی گئیں۔

حکومت کی جانب اسپتال کو کورونا کے لئے مکمل طور پر مختص کئے جانے کے بعد مارچ سے او پی ڈی سمیت الیکٹو سروسز کو بند کردیا گیا تھا۔

صوبے میں کورونا کی شرح میں نہ صرف کمی ہورہی ہے بلکہ اسپتالوں کے بیشتر بیڈز بھی خالی ہورہے ہیں جسی کے بعد اسپتال کی او پی ڈی کو بحال کردیا گیا ہے۔

اسپتال ترجمان محمد عاصم کے مطابق ابتدائی طور پر 10 شعبہ جات کی او پی ڈی کو مریضوں کے لئے بحال کیا گیا ہے.

انہوں نے کہا کہ گائنی، پیڈس، روماٹالوجی، ای این ٹی، آئی، سائکاٹری، میگزیلوفیشل، اینڈو کرائنالوجی، ڈرماٹا لوجی، یورالوجی کے شعبہ جات کی او پی ڈیز کو کھولا گیا ہے جبکہ اوپی ڈی میں صرف 500 معائینہ پرچیاں مریضوں کو جاری کی جائیں گی۔

اسپتال ترجمان کا کہنا ہے کہ ان میں روزانہ 100 گائنی کے مریضوں اور 400 باقی امراض کے مریضوں کو دیکھا جائے گا۔

اسی طرح نہایت ضروری داخلے اور آپریشن ہوں گے۔ اسپتال ترجمان کا یہ بھی کہنا تھا کہ اوپی ڈی کو سخت ایس او پیز کے ساتھ بحال کیا گیا ہے۔

ماسک کے بغیر کسی مریض کو اوپی ڈیزمیں آنے کی اجازت نہیں ہوگی جبکہ ایک مریض کے ساتھ ایک تیماردارکو صرف آنے کی اجازت ہوگی۔

اسپتال ترجمان کے مطابق اسپتال میں ابھی بھی 100 کورونا کے مریض زیرعلاج ہیں۔ کورونا مرض کے حوالے سے کوئی رسک نہیں لیا جاسکتا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے ایل آر ایچ کی او پی ڈی بند ہونے کے باعث خیبر ٹیچنگ اسپتال اور حیات آباد میڈیکل کمپلیکس میں مریضوں کے رش میں بے پناہ اضافہ ہوگیا ہے۔