خیبر اور اورکزئی قبائل کے مابین زمینی تنازعہ کے حل کے لئے جرگے کا انعقاد

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

ضلع خیبر اور ضلع اورکزئی کے قبائل کے مابین زمینی تنازعہ کے پر امن حل کے لئے دونوں اضلاع کے ضلعی انتظامیہ نے اعلیٰ سطح کا جرگہ منعقد کیا ہے جس میں فائر بندی میں مزید توسیع کے لئے راستہ ہموار کیا گیا ہے۔

گزشتہ ہفتے ضلع خیبر کے قبیلہ اکاخیل سنزل اور اورکزئی قبیلہ فیروز خیل کے درمیان زمینی تنازعہ شدت اختیار کر گیا تھا جس کے باعث جھڑپوں کے دوران دونوں اطراف سے ہلاکتیں سامنے آئی تھی جبکہ متعدد افراد زخمی بھی ہوگئے تھے۔

اس حوالے سے خیبر ہاوس میں گزشتہ روز ایک جرگہ منعقد ہوا جس میں ڈپٹی کمشنر خیبر منصور ارشد، ڈپٹی کمشنر اورکزئی محمد خالد، ضلعی پولیس سربراہ خیبر وسیم ریاض، ضلعی پولیس سربراہ اورکزئی محمد نثار، ایم پی اے شفیق افریدی، ایم پی اے غزن جمال، اسسٹنٹ کمشنر باڑہ نیک محمد، اسسٹنٹ کمشنر اورکزئی نوید اللہ شاہ سمیت خیبر اور اورکزئی کے مشران نے شرکت کی۔

خیبر ہاوس میں منعقدہ جرگے میں اکاخیل سنزل اور اورکزئی قبیلہ فیروز خیل کے درمیان کشیدگی، تیگہ (سیز فائر) میں توسیع، آئندہ جرگہ کے لئے طریقہ کار وضع کرنے، سفارشات اور بہتر حل پر دونوں اقوام کی موجودگی میں تفصیلی بات چیت کی گئی۔

طویل بات چیت کے بعد دونوں اقوام کے مشران کی جانب سے دس دس رکنی  جرگہ وفود پیش کئے گئے اور اس بات پر دونوں اقوام کے مشران نے اںتظامیہ کی موجودگی میں متفقہ اتفاق کیا کہ ایک دن بعد ضلعی انتظامیہ اور خیبر پولیس سمیت ضلعی انتظامیہ اور اورکزئی پولیس جرگہ ممبران کے ہمراہ مزکورہ علاقہ کا دورہ کرکے معائنہ کریں گی۔

وفد مورچوں اور اس کے اطراف میں دونوں جانب سے عائد کئے گئے الزامات، شکایات اور گزارشات کا جائزہ لیکر انتظامیہ کو اگاہ کریں گی اور ان کے سفارشات  اور گزارشات کا جائزہ لیکر  جرگہ کی ائندہ بیٹھک میں دونوں اقوام کے مابین رکھا گیا تیگہ کو توسیع دینے اور کشیدگی کو مکمل ختم کرکے ، دونواں اقوام کی باہمی رضامندی سے مسئلے کا بہتر نکالیں گے تاکہ مزید انسانی جانوں کو بچایا جا سکیں