ساؤتھ وزیرستان : گورنمنٹ ڈگری کالج میں تعلیمی سیمنار کا انعقاد

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

گورنمنٹ ڈگری کالج وانا میں تعلیمی سیمنار کا انعقاد کیاگیا جس میں مختلف مکاتب فکر کے لوگوں نے کثیر تعداد میں شرکت کی ۔

تعلیمی سیمنار سے گورنمنٹ ڈگری کالج کے پرنسپل میرنواز خان نے کالج کی صورت حال پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ قیام 1974 میں لایا گیا 300 کنال پر مشتمل ہے ۔جس میں 520 طلباء زیر تعلیم ہیں ۔

انہوں نے خطاب کرتے ہوے کہا کہ گورنمنٹ ڈگری کالج وانا نے پروفیسرز ، انجنیئرز، اور ڈاکٹرز پیدا کیے ہیں ۔لیکن وار ان ٹیرر کے بعد کالج کے حالات دیگر گوں ہو گئے ہیں ۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہاں کے مقامی بچے دور دراز علاقے میں تعلیم حاصل کر رہے ہیں ۔جو والدین پر اس منہگائی کے دور ميں بوجھ بنے ہوئے ہیں

انہوں نے خطاب کرتا ہوے کہا کہ اج کا تعلیمی سیمنار کا مقصد والدین اور طلباء میں گورنمنٹ ڈگری کالج وانا کی افادیت کو اجاگر کرنا ہیں ۔کے والدین اپنے بچوں کی خاضری کو یقینی بنائے اور پرنسپل اور سٹاف کے ساتھ اس حوالے سے تمام مکاتبِ فکر تعاون کریں ۔

تعلیمی سیمنار سے صدر جلسہ مولانا نیک محمد خان ملک شہریار خان، سیاسی اتحاد کے صدر ایاز وزیر ، ظفر خان اور مولانا میرزا جان نے بھی خطاب کیا۔

اس موقع پر وانا ولفئیر ایسوسیشن کے صدر رحمت اللہ نے گورنمنٹ ڈگری کالج وانا کو فعال کرنے اور طلباء میں نکل کی کمی کے رحجان پر زیری خیلات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کے اچھے ادروں میں نوے فیصد حاضری یقینی تصور کی جاتی ہیں ۔

دوسری اہم بات یہ کے مئی میں فریسٹ ائیر کی کلاسیں شروع کر نی چاہئے ۔میٹرک کے امتحانات میں نکل کی روک تھام اشد ضروری ہے تاکہ مستقبل معمار کوالٹی تعلیم سے مستفید کیا جاسکیں ۔

تعلیمی سیمنار کے چیف گیسٹ اسسٹنٹ کمشنر وانا بشیر خان نے کہا برصغیر کے مسلمانوں میں سیاسی شہور اجاگر کرنے میں مدرسہ دیبند اور علی گڑھ کالج نے اہم کردار ادا کیا ۔

انہوں نے مزید کہا کہ ضرورت اس امر کی ہے کے علاقے کی ترقی میں تعلیم یافتہ نوجوان ہی اہم کردار ادا کرسکتے ہے

یاد رہے کہ ضلعی انتظامیہ کی جانب سے گورنمنٹ ڈگری کالج وانا کی فعالی اور مسائل حل کرنے میں مکمل تعاون کا یقین دلایا ۔