افغان مہاجرین کو نئے اسمارٹ کارڈز کے اجرا کا آغاز

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

نیشنل ڈیٹابیس اینڈ رجسٹریشن اتھارٹی (نادرا) پاکستان میں رجسٹرڈ 14 لاکھ افغان مہاجرین کو نئے بائیومیٹرک اسمارٹ شناختی کارڈز جاری کرے گی۔

نادرا نے افغان مہاجرین کو نئے اسمارٹ کارڈز کے اجرا کا آغاز منگل سے کیا اور یہ عمل رواں سال کے آخر تک مکمل ہو جائے گا، نئے کارڈز 2023ء تک درست تصور ہوں گے۔

رجسٹریشن کا نیا ثبوت (پی او آر) یہ کارڈز قانونی طور پر شناخت کا ثبوت تسلیم کیے جاتے ہیں اور ان میں بہتر سکیورٹی فیچرز موجود ہیں۔

یہ اقدام حکومت کی سربراہی میں اور یو این ایچ سی آر کی حمایت یافتہ ڈاکیومنٹیشن رینیوول اینڈ انفارمیشن ویری فکیشن ایکسرسائز (ڈرائیو) کا حصہ ہے۔

اس ایکسرسائز کے ذریعے پاکستان میں رجسٹرڈ تقریباً 14 لاکھ افغان مہاجرین کی معلومات کی تصدیق ہو سکے گی اور انہیں پاکستانی شہریوں کو دیے جانے والے شناختی کارڈز والی ٹیکنالوجی کی بنیاد پر ہی نئے پی او آر کارڈز دیے جائیں گے۔

ڈرائیو تصدیقی انٹرویو کے بعد مہاجرین کو ایس ایم ایس کے ذریعے اطلاع دی جائے گی کہ وہ کب اور کہاں سے اپنے کارڈز حاصل کر سکتے ہیں۔

پاکستان میں افغان مہاجرین کے لیے چیف کمشنر سلیم خان نے کہا کہ ڈرائیو ایکسرسائز وزارت ریاستی و سرحدی امور (سیفران) اور یو این ایچ سی آر کی مشترکہ کاوش ہے، جس میں نادرا کی تکنیکی معاونت حاصل ہے۔

یو این ایچ سی آر کے پاکستان میں نمائندے نوریکو یوشیدا نے اس اہم اقدام کو اٹھانے پر حکومتی کوششوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ مہاجرین کے تحفظ اور مہاجر کمیونٹی کے درمیان ہم آہنگی بڑھانے کے لیے یہ اہم موقع ہے۔

انہوں نے کہا کہ ڈرائیو، رجسٹرڈ افغان مہاجرین اور ان کے پاکستان میں موجود اہلخانہ کی اپ ڈیٹڈ معلومات فراہم کرے گا، اس سے ہمیں حکومت پاکستان اور مہاجرین کی مدد میں معاونت فراہم ہو گی۔