حکومت کا نسخے پر ادویات کا برانڈ اور نام لکھنے پر پابندی عائد

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

خیبر پختونخوا کے ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی (ڈریپ) نے تمام ڈاکٹرز کو نسخے میں ادویات کا برانڈ اور نام لکھنے سے روکنے کے احکامات جاری کردیے۔

ڈریپ کی جانب سے ڈاکٹرز کو مراسلہ ارسال کیا گیا جس میں ہدایت کی گئی ہے کہ وہ کسی بھی مریض کو نسخے میں دوا کا نام اور برانڈ لکھ کر نہ دیں۔

خیبر پختونخوا کے ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی کی جناب سے جاری مراسلے میں ہدایت کی گئی ہے کہ ڈاکٹرز مریض کو دیے جانے والے نسخے میں صرف دوا کافارمولا لکھیں گے۔

یہ فیصلہ لوگوں کے شکایت پر کیا گیا جس کا کہنا تھا کہ نجی اور سرکاری سطح پر ڈاکٹرز بااثر میڈیسن کمپنیوں کا مہنگا نسخہ لکھ دیتے ہیں۔

ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی نے اپنے نوٹی فکیشن میں لکھا ہے کہ پرائم منسٹر ڈلیوری یونٹ کو متعدد بار بااثر میڈیسن کمپنیوں کے برینڈ نام لکھنے کی شکایات موصول ہوئیں تھیں.

لوگوں کا کہنا ہے کہ ڈاکٹرز کی جانب سے نسخے میں برینڈ کا نام لکھنے سے مریض مہنگی ادویات خریدنے پر مجبور ہوتے ہیں، جس سے عام مریض پر بوجھ پڑتا ہے۔

اس فاصلے کے بعد ڈاکٹرز ادویات کے برینڈ کے نام کی بجائے سالٹ لکھیں گے اور انہیں صرف ادویات کا فارمولا لکھنے کی اجازت ہوگی۔

اس نیے قانون کے مطابق نسخے پر کسی بھی کمپنی یا اس کی دوا کا نام لکھنا غیر قانونی اقدام میں شمار کیا جائے گا۔