جنوبی وزیرستان : معیاری تعلیم کی فراہمی کیلئے مڈل سکول تعمیر

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

پاک فوج کا تعلیم سے تعمیر وطن کا عزم کیونکہ جدید اور ترقی یافتہ دور میں اگر کسی بھی ملک وقوم کو آگے بڑھنا ہے تو یہ بات تو طے ہے کہ ان کی ترقی کاسفر حصول علم اور فروغ علم کے بغیر جاری نہیں رہ سکتا ۔

خیبر پختونخوا کے قبائلی اضلاع میں طالبان عسکریت پسندوں نے نظامِ تعلیم کی کمزور کرنے کیلئے سینکڑوں تعلیمی اداروں کو نشانہ بنایا۔

بحالی امن کیبعد پاک فوج نے قبائلی علاقوں میں معیاری تعلیم کے فروغ کیلئے نمایاں اقدامات کئے۔

جنوبی وزیرستان سابقہ فاٹا کا سب سے بڑا ضلع ہے۔ اس کا رقبہ 6619 مربع کلومیٹر ہے جہاں کل ملا کر 71412 گھرانے آباد ہیں.

پاک فوج نے جنوبی وزیرستان کی آٹھ تحصیلوں میں 861 ملین روپے کی خطیر لاگت سے 145 تعلیمی منصوبے مکلمل کر لئے ہیں جبکہ 1022 ملین روپے کی لاگت سے شروع 172 منصوبے تعمیر یا تکمیل کے مراحل میں ہیں۔

حال ہی میں پاک فوج نے جنوبی وزیرستان کے صدر مقام وانا سے 40 کلو میٹر دوری پر واقع خان کوٹ میں مستقبل کے معماروں کو معیاری تعلیم کی فراہمی کیلئے مڈل سکول تعمیر کیا.

خان کوٹ مڈل سکول کو ایک سال کی قلیل مدت میں 102 ملین روپے کی لاگت سے مکمل کیا گیا جس میں 20 کمرہ ہائے جماعت، 4 تجربہ گاہیں،لائبریری، کمپیوٹرلیب اور کھیل کا میدان شامل ہے

طلباء کی سہولت کیلئے کمرہ ہائے جماعت کے درمیان وسیع دالان اور گیلریاں بنائی گئی ہیں۔

پاک فوج کی جانب سے قبائلی اضلاع میں تعلیم کی بہتری کیلئے کی جانے والی کاوشیں اس بات کی غماز ہیں کہ قبائلی بچے بھی پڑھ لکھ کر پاکستان کے دوسرے صوبوں کے ہم پلہ آجائیں اور وطن کی خدمت میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں۔